تازہ ترین

امریکی شہری نے گلگت بلتستان میں 92 ہزار ڈالر ادا کرکے ایک مارخور شکار کرلیا۔

گلگت (ٹی این این ) امریکی شہری نے گلگت بلتستان میں مارخور کا شکار کرنے کے لیے 92 ہزار ڈالر فیس ادا کر دی۔ تفصیلات کے مطابق امریکی شکاری نے قانونی شکار کے تحت 1 لاکھ ڈالر فیس کے عوض مارخور شکار کیا۔امریکی شہری جان ایمسٹوسو نے گلگت بلتستان میں استور کے مقام پر مارخور کا شکار کھیلا۔ یہ استور کے مقام پر پہلی ہنٹنگ ٹرافی ایوارڈ کا انعقاد تھا۔
ذرائع محکمہ جنگلات نے بتایا کہ شکاری جان ایمسٹوسو نے مارخور کے شکار کے لیے 92 ہزار ڈالر فیس ادا کی ہے۔ فیس کی رقم سے 80 فیصد مقامی کمیونٹی جبکہ 20 فیصد حکومت کو ملیں گے۔ خیال رہے کہ مارخور کے شکار کے لیے ٹرافی ہنٹنگ کے نام پر حکومت کی جانب سے شکار کا پرمٹ جاری کیا جاتا ہے۔ مارخور کے شکار کی قیمت ایک کروڑ سے ڈیڑھ دو کروڑ تک ہو سکتی ہے۔
ہر سال مارخور کی شکار کے لیے ہنٹنگ ٹرافی کے لیے بین الاقوامی سطح پر بولی ہوتی ہے، جو شکاری سب سے زیادہ بولی دیتا ہے اسی کو شکار کا لائسنس دے دیا جاتا ہے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستان میں پرندوں کے شکار کے لیے آنے والے غیر ملکیوں کے لیے ہدایات جاری کی گئی ہیں، اور یہ گائیڈ لائنز متعلقہ سفارت خانوں کو پہنچا دی گئی ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق ہدایت نامہ کی دستاویز میں کہا گیا کہ شکار کرنے والوں کو امریکی ڈالرز میں فیس ادا کرنا ہوگی۔
دستاویز کے مطابق فیس کی وصولی صرف امریکی ڈالرز میں کی جائے گی، اور شکار کرنے والوں کو متعلقہ علاقہ میں ترقیاتی کام بھی کروانا ہوگا۔ حکام نے متعلقہ صوبوں کو علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں کی نشاندہی کی ہدایت بھی کی۔ ایک ہزار امریکی ڈالر میں 100 پرندے شکار کرنے کی اجازت ہوگی، تمام شکار کیے گئے پرندوں پر کسٹم ڈیوٹی الگ سے وصول کی جائے گی۔ دستاویز میں واضح ہدایت کی گئی تھی کہ شکار کی جگہ کی پہلے اور بعد کی تصاویر بھی لی جائیں گی۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*