غذر کے دکانوں میں پٹرول کی بلیک مارکیٹنگ کا سلسلہ عروج پر، لوگ دیگر کاروبار چھوڑ کر اس کام میں لگ گئے۔ ضلعی انتظامیہ خاموش۔

غذر( پ،ر) غذر کی چاروں تحصلیوں میں زیادہ تر دکانوں میں پٹرول فروخت کرنے کا کاروبار ایک منافع بخش کاروبار بن گیا،دوکانداروں اپنا دیگر کاروبار کو چھوڑ کر پٹرول اور ڈیذل فروخت کرنے کا کاروبار شروع کر دیا ہے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر میں چار پٹرول پمپ موجود ہونے کے باوجود نواحی گاوں میں پٹرول اور ڈیذل فروخت کرنے کی کئی دکانیں موجود ہیں جبکہ تحصیل پونیال کے علاوہ گوپس ، اشکومن ،پھنڈر اور یاسین میں بھی ہر دوسری دکان میں پٹرول اور ڈیذل فروخت کرنے کا کاروبار جاری ہے اور یہ لوگ غذر کے کوٹے پر آنے والا پٹرول اور ڈیذل کو راتوں رات پڑول پمپوں سے اٹھاکر اپنی دکانوں میں سٹاک کرتے ہیں جو کہ کسی بھی خطرے سے کم نہیں اس کے باوجود بھی انتظامیہ کی خاموشی حیران کن ہے اور ان افراد کو کھلی اجازت ہے جو اپنی مرضی کا ریٹ لگاکر پڑول اور ڈیذل فروخت کر رہے ہیں حالانکہ حکومت عوام کے لئے پٹرولیم مصنوعات کی مد میں عوام کو کروڑوں کا ریلیف دے رہی ہے مگر یہ ریلیف عوام کی بجائے بلیک میں اس کا کاروبار کرنے والوں کے جیب میں چلا جاتا ہے دوسری طرف مسافر گاڑیوں میں گلگت اور گاہکوچ سے ان گاڑیوں کی چھتوں پر پٹرول کے کین رکھ کر لے جاتے ہیں جو کسی بھی وقت کوئی بڑے حادثے کا سبب بن سکتا ہے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc