گلگت بلتستان میں مسلم لیگ ( ن)کے اندر گروہ بندی جڑ پکڑتی جارہی ہے فاروڈبلاک کیلئے کئی اہم ناراض رہنماسرگرم میرسلیم سے رابطے بڑھا دئے۔

ہنزہ ( نامہ نگار) گورنر گلگت بلتستان کے بیٹے ہنزہ سے منتخب رکن قانون ساز اسمبلی میر سلیم کی جناب سے حفیظ الرحمن کی وزیر اعلیٰ شب کو شخصی قرار دینے اور پارٹی کی جانب سے سمن جاری کرنے کی باتوں میں کو مسترد کرنے کے بعد ایسا لگتا ہے کہ مسلم لیگ نون میں دھڑے بندی جڑ پکڑ تی جارہی ہے دوسری طرف پیپلز پارٹی نے بھی اس گنگا میں ہاتھ دھونے کا فیصلہ کرتے ہوئے میر سلیم کے ساتھ تعاون کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کیلئے بیک ڈور ڈپلومیسی پر کام جاری ہیں، اطلاعات کے مطابق ایک درجن کے قریب لیگی رہنما جو حفیظ الرحمن کے روئے اور اقرباء پروری سے تنگ تھے جنہوں نے اختلافات کی سنگینی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے موقع غنیمت سمجھ کر میر سلیم سے خفیہ ملاقاتیں بڑھا دیئے ہیں۔

یہ تمام معاملات اپنی جگہ لیکن گلگت بلتستان میں جب سے حافظ حفیظ الرحمن کی حکومت آئی ہے امن امان کا مسلہ تقریبا حل ہوگیا ہے جسے سی پیک کیلئے فیورٹ قرار دیا جارہا ہے لہذا بیورکیسی کی کوشش ہوگی کہ حفیظ الرحمن کی حکومت چلتا رہے تاکہ گلگت بلتستان میں دہشتگردی کے حوالے سے معاملات خراب نہ ہو۔

 

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc