گلگت بلتستان کو داخلی خودمختاری دی جائے، سابق وزیر اعظم آذاد کشمیر کا دھماکہ خیز مطالبہ۔

اسلام آباد(تحریر نیوز نیٹ ورک)عوامی ایکشن کمیٹی JKGB کے وفد نے سابق وزیر اعظم سردار عتیق صاحب سے ملاقات کیا ملاقات میں گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے لیڈرشپ کو گلگت بلتستان کی داخلی خود مختاری اور آئینی حثیت پر مشترکہ موقف کیطرف پیش قدمی پر اتفاق رائے پیدا کی گئی جس پر سابق وزیراعظم آزاد کشمیر سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ گلگت بلتستان کی سیاسی حیثیت کو تبدیل کیے بغیر آئینی اور داخلی خود مختاری دی جائے اس بات کی کشمیری لیڈر شپ نے کبھی کوئی مخالفت نہیں کی البتہ گلگت بلتستان اور کشمیر کی سیاسی حیثیت کو بگاڑ نے کی کوشش کی جارہی تھی جس کی مذمت کی گئی دوران گفتگو چئیرمین عوامی ایکشن کمیٹی مولانا سلطان رئیس نے کہا کہ گلگت بلتستان کے لوگوں نے مسئلہ کشمیر میں ریاستی موقف کی خاطر بے پناہ مسائل برداشت کرتے ہوئے بے تحاشہ قربانیاں دی ہیں ایسے میں جب گلگت بلتستان پر برا وقت آیا سٹیٹ سبجیک رول ختم کیا گیا گلگت بلتستان کو ای زون بنا کر مارشلا کا نفاذ ہوا حدود تنازعات پیدا کیئے گئے غیرقانونی ٹیکسز سمیت شیڈول فور اور اے ٹی اے کا ناجائز استعمال کے ذریعے سے ہر قومی آواز کو دبانے کی کوشش کی گئی جس پر آپ یا کشمیر کی دیگر لیڈر شپ کی جانب سے کسی قسم کی مزاحمت نہیں کی گئی لیکن حالیہ دنوں میں جب گلگت بلتستان کو اختیارات دینے کی بات آئی تو مایوس کن بیانات سننے کو ملے جس پر انہوں نےکہا کہ اخبارات کی شہ سرخیاں ادھورا رن چھوڑ دیتی ہیں اصولی موقف بیان نہیں کیا جاتا اور ساتھ ہی انہوں نےکہا کہ گلگت بلتستان کے مسائل سے نہ صرف مکمل طور پر آگاہ ہیں بلکہ اپنے دور حکومت میں گلگت بلتستان کو ساتھ لیکر چلنے کی کوشش کی ہے اور آج بھی چاہتے ہیں کہ سیاسی حیثیت کو متاثر کیئے بغیر گلگت بلتستان کو مکمل آئینی سیاسی مالیاتی اور معاشرتی حقوق دیئے جائیں جس پر عوامی ایکشن کمیٹی ساتھ مل کر تحریک چلانے کو کہے گی تو مکمل تعاون کریں گے اگر گلگت بلتستان کے عوام چاہتے ہیں تو صدر اور وزیراعظم کے دونوں عہدے گلگت بلتستان کو دیکر بھی ساتھ چلنے کو تیار ہیں جس پر سرپرست عوامی ایکشن کمیٹی گلگت بلتستان آغاعلی رضوی نے کہا کہ عوامی ایکشن کمیٹی کا واضح موقف ہے کہ مسئلہ کشمیر کو متاثر کیئے بغیر تا تصفیہ کشمیر گلگت بلتستان کو داخلی خودمختاری دی جائے اور گلگت بلتستان کے تمام حکومتی اور مالی اختیارات گلگت بلتستان منتقل کی جائے دوران ملاقات گفتگو کرتے ہوئے سابقہ ممبر گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی آمنہ انصاری نے کہا کہ گلگت بلتستان کے تاریخی کاروباری اور تقافتی راستوں کا لنک کرنا وقت کا تقاضا بن چکا ہے جس پر سردار عتیق احمد خان نے کہا کہ ہم نے 2005 میں شونٹر ٹنل کیلئے 5کروڈ روپے مختص کیا ہے جو آج تک اسی مد میں موجود ہیں اس سمیت دیگر اہم راستوں کو کھلوانے کیلئے جدوجہد کریں گے ملاقات میں رابطہ کمیٹی کے دیگر ممبران راجہ میرنواز میر. سردار عابد رشید. مولانا محمد افضل شاہ. محمد شاہد.ابراہیم حیدری. کیپٹن ریاض.اور انجینئر شبیر وغیرہ نے شرکت کی. اجلاس کے آخر میں گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کی لیڈر شپ اور عوام کو یکجا کر کے گلگت بلتستان کے بنیادی حقوق کے حصول کیلئے مشترکہ طور پر جدوجہد کے عزم کا اظہار کیا گیا. اور باقاعدہ کمیٹی قائم کی گئی جو گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کی لیڈر شپ سے ملاقاتیں کر کے انہیں گلگت بلتستان کے آئینی مسائل حل کیلئے آمادہ کرے گی. مذکورہ کمیٹی آج وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ سے ملاقات کریگی اور گلگت بلتستان کے حکومتی موقف کو لیکر جدوجہد کو تیز کیا جائے گا۔

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc