گلگت بلتستان میں شخصی حکومت ہے حفیظ الرحمن کی سازشوں سے پارٹی کو نقصان ہورہا ہے۔ رکن قانون ساز اسمبلی ولی عہد ہنزہ پھٹ پڑے۔

ہنزہ( پ،ر) رکن قانون ساز اسمبلی رہنما پاکستان مسلم لیگ نون گلگت بلتستان پرنس سلیم خان نے کہا ہے کہ وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمنکی شخصی حکومت ہے لیکن آج تک پارٹی کے مفاد میں چُ رہامگر اب خاموشی توڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ میں دیامر کے بعض اراکین اسمبلی کی طرف سے سامنے آنے والی شکایات کی کھل کر حمایت کرتا ہوں ۔ حافظ حفیظ الرحمن کا ضلع ہنزہ کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک،زیادتیاں اور ناانصافیاں عروج پر پہنچ چکی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پریس ریلز میں اُنہوں نے کہا ہے کہ وزیر اعلی حافظ حفیظ الرحمن نے مجھے اسمبلی میں آنے سے روکنے کے لیے ہر قسم کے ہتھکنڈے اور حربے استعمال کیے اور مجھے ضمنی الیکشن میں ٹکٹ دینے کے لیے جعلی سروے بھی کرواکر مرکزی قیادت کو گمراہ کرنے کی ناکام کوشش کی۔ لیکن میں تمام سازشوں کا مقابلہ کرکے کامیاب ہوگئے۔

اُنہوں نے کہا کہ ضلع ہنزہ کا کوئی بھی عوامی مسئلہ وزیر اعلی حافظ حفیظ الرحمن کی ترجیحات یا فہرست میں سرے سے شامل ہی نہیں۔ اور وہ کبھی کبھار ہنزہ محض فوٹو سیشن اور سیر سپاٹے کے لیے آتے ہیں۔ اُنہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ سی پیک اور غیر معمولی سیاحتی سرگرمیوں کے باعث ضلع ہنزہ کی منفرد حیثیت سے کوئی انکار نہیں کر سکتا۔مگر وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے ہنزہ کے کسی بھی ایشو پر مجھے اعتماد میں لینے یا مجھ سے مشاورت کرنے کی ضرورت تک محسوس نہیں۔ رکن قانون ساز اسمبلی نے مزید کہا کہ حفیظ الرحمن کی غلط پالیسیوں اور سازشی اقدامات کی وجہ سے ہنزہ میں مسلم لیگ ن کا وجود برائے نام رہ گیا ہے۔اور میں دعوے سے کہتا ہوں کہ اُنکا یہ رویہ چلتا رہا تو آنے والے الیکشن میں نہ صرف ہنزہ بلکہ پورے جی بی میں مسلم لیگ ناقابل تلافی نقصان سے کوئی نہیں بچا سکے گا۔ اُنہوں نے کہا کہ میں نے یہ فیصلہ کر لیا ہے کہ اس ساری صورتحال پر مبنی ایک تفصیلی رپورٹ حقائق اور ثبوتوں کے ساتھ وزیر اعظم اور مسلم لیگ ن کی اعلی قیادت کے سامنے پیش کروں گا۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc