گلگت بلتستان کو کسی کی چراگاہ نہیں بننے دیں گے، ہم نے زور بازو سے آذادی حاصل کرکے پاکستان کے ساتھ الحاق کیا ہے۔امجدحسین ایڈوکیٹ

غذ( نامہ نگار) غذر گاہکوچ بالا میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے صدر پاکستان پیپلزپارٹی گلگت بلتستان امجد حسین ایڈوکیٹ نے کہا ہے کہ اس وقت مملکت پاکستان ایک جم غفیر بن گیا ہے جہاں آٹھائیس ہزار مربع میل پر محیط گلگت بلتستان کا قومی سوال گم ہوچُکا ہے۔ ہم پچھلے ستر سالوں نے اپنی شناخت کی بات کر رہے ہیں مگر بدقسمتی سے ہر دور کے حکمرانوں نے گلگت بلتستان کو نظرانداز کیا۔ ہمارے بزرگوں نے خطے کو اپنے بزور طاقت آزاد کرایا اورپاکستان کے ساتھ الحاق کیا تھا بدقسمتی سے ہماری محبت ، خلوص اور نیک نیتی کا جواب بے وفائی کی صورت میں مل رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے لوگ تیار ہوجائیں اب قومی سوال کے ایشو پر حکمرانوں کے گریبان پکڑنے کا وقت آچکا ہے گلگت بلتستان کو مزید کسی کی چراگاہ نہیں بننے دیں گے انہوں نے موجودہ حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آج گلگت بلتستان میں جو اصلاحات نظر آرہی ہیں وہ شہید بھٹو کی مرہون منت ہے مسلم لیگ ن کو تین مرتبہ حکومت ملنے کے باوجود گلگت بلتستان کے لیے ایک پائی کا کا م نہیں کیا۔

یاد رہے گلگت بلتستان قانونی اور آئینی طور پر آج بھی سابق ریاست جموں کشمیر کی ایک اکائی ہے اور مسلہ کشمیر کا کیس اس وقت اقوام متحدہ میں پینڈنگ پڑی ہے اور حکومت پاکستان کی طرف سے بارہا اس بات کا اعلان کرچُکے ہیں کہ گلگت بلتستان کی متنازعہ حیثیت کے سبب اس خطے کو آئینی اور قانون حقوق دینے سے پاکستان کی خارجہ پالیسی اور کشمیر کاز پر منفی اثر پڑھ سکتا ہے اور گلگت بلتستان کو مکمل آئینی حقوق دینے کی صورت میں بھارتی مقبوضہ کشمیر کو بھارت اپنے آئین میں ضم کرسکتا ہے۔ لہذا گلگت بلتستان کو مسلہ کشمیر کی حل تک پاکستان کا پانچواں صوبہ بنانے کیلئے نہ ہی پاکستان راضی ہے اور نہ اقوام متحدہ ایسا کرنے دے گا۔ لیکن گلگت بلتستان کے سادہ لوح عوام کو الحاق کے نام پر متنازعہ حیثیت کے مطابق حقوق مانگنے کے بجائے بیوقوف بنا رہے ہیں۔ اگر گلگت بلتستان کا پاکستان سے ساتھ واقعی الحاق ہوچکا ہوتا تو اب تک گلگت بلتستان پاکستان کا پانچواں آئینی صوبہ کہلاتے۔ دوسری طرف گلگت بلتستان کو چراگاہ بنانے کا سلسلہ بھی بھٹو دور میں ہی شروع ہوا تھا جب اس خطے میں باشندہ قانون سٹیٹ سبجیکٹ رول کی خلاف ورزی کرکے عوام کو سٹیزن شب ایکٹ کے نام پر بیوقوف بنایا تھا۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc