ہم اور عورت. تحریر : سید ساجد حسین

ہم ایسے معاشرے کا حصہ ہیں کہ جہاں ایک طرف راہ چلتے خاتون کی طرف سے مدد مانگنے پر سیکڑوں جوان اپنا کام دھندہ چھوڑ کر دوڑے چلے آتے ہیں تو دوسری طرف اپنی انا اور جہالت کی بقا کے لئے اسی بنت حوا کے منہ پہ تیزاب پھینک کر جلا دینے سے بھی گریز نہیں کرتے ـ ایسے میں عورت کے حق میں بولنا ضروری ہوجاتا ہے اور اس ضمن میں ایک عنوان ” عورت کی آزادی ” ہمیشہ سے زیر بحث رہا ہے ـ یہ تفصیل طلب موضوع ہے مختصر پیرائے میں اس بحث کو سمیٹنا انتہائی مشکل ہے مگر انتہائی اختصار کے ساتھ ایک اہم بات اس ضمن میں قارئین تک پہنچانے کی کوشش کروں گاـ مختلف ادوار میں مختلف تجاویز سامنے آئی ہیں جن کی بنیاد پہ یہ گمان کیا گیا کہ ان تجاویز پہ عمل سے عورت کو آزادی میسر آئے گی ـ اکثر اوقات عورت کی آزادی کے لئے یورپ یا مغربی ممالک کی مثالیں دی جاتی ہیں مگر میں یہ سمجھتا ہوں کہ آدمی اور بنت حوا کے مابین ” طاقت ” کے استعمال اور اس سے ملحق جھگڑے دنیا کے تمام گوشہ و کنار میں دیکھنے کو ملیں گے ـ ضروری نہیں کہ مغربی ممالک کے عورتوں کی طرز زندگی آزاد ہو بلکل اسی طرح یہ بھی ضروری نہیں کہ مشرق کی ہر عورت آزادی سے محروم ہو ـ یہاں ضروری ہے کہ عورت کی آزادی کا مفہوم سمجھا جائے ـ میرے نزدیک ” سوچنے کی آزادی ” ہی وہ بنیادی عنصر ہے کہ جس کی بنیاد پہ عورت کو آزادی میسر آسکتی ہے ـ ذہنی غلامی ہی بدترین غلامی ہے اور اس سے آزادی ہی بنیادی آزادی ہے ـ دماغی طور پہ آزاد شخص بہترین فیصلہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور ہمیشہ کچھ کر دکھانے کی جستجو میں دنیا کے رازوں سے ہمراز ہوتا ہوا ناقابل تسخیر محاذوں پہ کامیابی کے جھنڈے گاڑنے میں کامیاب ہوتا ہے ـ عورت صرف ایک صنف ہی نہیں بلکہ مکمل انسان ہے اور وہ تمام صلاحیتیں جو مردوں میں موجود ہے اس میں بھی پائی جاتی ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ اسے لکیر کا فقیر بننے سے روکا جائے اور طاقت کی بنیاد پہ اپنے نظریات اور فیصلے اس پہ تھوپنے کے بجائے اسے فیصلے کرنے کی آزادی دی جائے تاکہ وہ ایک بہترین معاشرے کے قیام کو یقینی بنانے میں اپنا موثر کردار ادا کرسکے ـ مرد کا اثراسوخ عورت کے کارناموں پہ ہمیشہ سے اثر انداز ہوتا آیا ہے مگر اس حقیقت سے کسی صورت انکار نہیں کیا جاسکتا کہ عورت کے بغیر مرد کبھی کامیاب نہیں ہوسکتا ـ (جاری ہے)

 

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc