گلگت بلتستان کے قدیم تہذیبی اور ثقافتی مراکز پر دہشتگردی کے امکانات، حکومت ہوش کے ناخن لے۔

اسلام آباد( نامہ نگار) گلگت بلتستان کئی ثقافتوں اور تہذیبوں کا امین ہے ۔ صدیوں سال پہلے اس خطے میں کئی مذاہب کے عروج اور زوال کی داستانیں مختلف اشکال میں آج بھی یہاں قائم دائم ہیں جو اس خطے کی تاریخی اور ثقافتی ورثہ ہے۔ لیکن میانمار میں مسلمانوں کے ساتھ ہونے والی ذیادتیوں پر مذہبی انتہا پسند طبقے کی جانب سے سوشل میڈیا پر( مشعل) نامی فیس بک پیج سے گلگت بلتستان میں موجود بدھا مجسوں اور قدیم ثقافتی مقامات کو ختم کرنے کیلئے مسلسل پروپگنڈہ کیا جارہا ہے۔

المیہ یہ ہے کہ پاکستان میں اس قسم کے دہشت گردوی کی روک تھام کے حوالے سے متعلقہ ادارے ناکام نظر آتا ہے۔ حکومت گلگت بلتستان کو چاہئے کہ اثار قدیمہ کے مراکز ، مقامات اور داخلی چیک پوسٹوں پر سیکورٹی کو ذیادہ سے ذیادہ موثر بنائیں۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*

apental calc