تازہ ترین

ڈسٹرک ہیڈکوارٹر ہسپتال سکردو میں ڈاکٹروں کی نااہلی نے نمونئے کی بیماری کو دل کا مریض قرار دے دیا۔

سکردو( ڈسٹرک رپورٹر) ڈسٹرک ہیڈکوارٹر ہسپتال سکرود میں بلتستان کے چاروں اضلاع سے مریض علاج کی غرض سے آتے ہیں ۔ لیکن اس ہسپتال میں سہولیات کی عدم دستیابی کے ساتھ ڈاکٹروں کی ناتجربہ کاری ایک سنگین مسلہ رہا ہے۔ یہاں معمولی مریض کو ڈاکٹروں کی نااہلی اور ناتجربہ کاری کی وجہ سے بغیر کسی تشخیص کے مہلک بیماریوں کی دوائی کھلائے جاتے ہیں جو بعد میں غلط دوائی کھانے کی وجہ سے مہلک بیماریوں کے شکار ہوتے ہیں۔ ایسا ہی ایک واقعہ گزشتہ دنوں پیش آیا جب ضلع کھرمنگ سے کسی مریض کو ایمرجنسی میں داخل کرایا تو اُنہوں نے مریض کو ہارٹ اسپشلسٹ کے پاس ریفر کردیا۔ مریض کے بیٹے کے مطابق اُنہوں نے جب مریض کو ڈاکٹر ہادی نامی ڈاکٹر کو دکھایا تو اُنہوں نے کہا کہ اس ہارٹ کی بیماری ہے اور فوری تشخیص کی ضرورت ہے، اُنکا کہنا تھا کہ ہم نے پریشان ہوکر ای سی جی وغیرہ کروایا دیا لیکن دوائی کھلانے سے پہلے مشاورت سے دوسرے دن اسی ہسپتال کے میڈیکل اسپشلسٹ ڈاکٹر ساجد سے چیک کروایا تو اُنہوں نے کہا کہ مریض کو نمونئے کی بیماری ہے ۔ اُنہوں نے ایکسرے وغیرہ کروایا تو معلوم ہوگا کہ مریض ہارٹ کا نہیں بلکہ نمونئے کا مریض ہے۔ ہم نے موقع پر موجود کچھ مزید لوگوں سے بھی اس حوالے سے معلوم کیا تو لوگوں کا کہنا تھا کہ یہاں یہ سب روز کا معمول ہے لیکن آج پہلی بار کسی میڈیا پرسن کے سامنے ایسا ہو ا ہے۔ محکمہ صحت کو چاہئے اس معاملے کی چھان بین کریں۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*