تازہ ترین

حسنین رمل کو رہا نہ کرنے کی صورت میں اس مسلے کو اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن میں اٹھایا جائے گا۔ سابق صدر جموں کشمیر نیب اور صدر ڈوگر سبھا جموں کشمیر۔

اسلام آباد ( پریس ریلز) جموں کشمیر نیپ برطانیہ کے سابق صدر اور ڈوگرہ صدر سبھا کے انٹرنیشنل کوآرڈینیٹر پروفیسر سجاد راجہ نے ایک پریس ریلز کے ذریعے حکومت پاکستان اور گلگت بلتستان کی حکومت کو متنبہ کیا ہے کہ ہنزہ سے تعلق رکھنے والے پرامن سیاسی کارکن حسنین رمل کو فوری طور پر رہا کیا جائے۔ سجاد راجہ نے حکومت کو بیس ستمبر کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ اگر حسنین رمل کو بیس ستمبر تک رہا نہ کیا گیا تو ان کی گرفتاری کے مسئلے کو اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن میں اٹھایا جائے گا۔ سجاد راجہ نے کہا کہ حسنین رمل ایک پرامن سیاسی کارکن ہے جو اپنے عوام کے حقوق اور علاقے کی تعمیر و ترقی کے لئیے پرامن جدوجہد پر یقین رکھتا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ حسنین رمل کو گرفتار کر کے جے آئی ٹی کے حوالے کرنا گلگت بلتستان میں بنیادی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے اور اس صورتحال کو کسی صورت میں برداشت نہیں کیا جا سکتا۔
سجاد راجہ نے کہا کہ گلگت بلتستان میں پہلے ہی بابا جان، کامریڈ افتخار اور ان کے ساتھیوں کو جس طرح جھوٹے مقدمات میں الجھا کر چالیس چالیس سال کی سزائیں سنائی گئی ہے وہ ریاست جموں و کشمیر کے عوام کسی بھی صورت قبول نہیں۔
سجاد راجہ نے نیپ کی مرکزی قیادت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے نیپ کی طرف سے 24 اگست کو راولاکوٹ میں اسیران گلگت بلتستان کی رہائی کے لئیے مظاہرے کے پروگرام کو سراہا اور کہا کہ سردار لیاقت حیات کی قیادت میں نیپ ریاست جموں کشمیر و گلگت بلتستان کے عوام کی حقیقی نمائندہ قوت کے طور پر ابھرے گی۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*