تازہ ترین

ضلع شگر میں سب سے ذیادہ ہائیڈرو پاور جنریشن کے مواقع کا انکشاف۔

شگر(عابدشگری)ایگزیکٹیو انجینئر محکمہ برقیات شگر شاکر علی نے کہا ہے کہ ضلع شگر میں پاور جنریشن کے حوالے سب سے بہتر مواقع ہے ۔ حکومت توجہ دیں توانتہائی کم خرچے پر پورے گلگت بلتستان کیلئے وافر مقدار میں بجلی فراہم کرنے کیلئے یہاں مواقع موجود ہے۔نوزائید ضلع شگر میں محکمہ برقیات کو فنڈز کے حوالے سے بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے لیکن کم وسائل کے باؤجود محکمہ برقیات شگر مستقبل کیلئے بہتر حکمت عملی مرتب کرنے کیلئے کوشاں ہے۔ضلع شگر گلگت بلتستان کے دیگر اضلاع کے مقابلے میں خوش قسمت ہے کہ یہاں لوڈ شیڈنگ نامی کوئی شے نہیں۔اس وقت شگر میں7ہائیڈرو اسٹیشن سے 4.5میگاواٹ بجلی کی پیداوار جاری ہے۔جوکہ سردیوں میں پانی کی کمی کی وجہ سے 2.3میگاواٹ رہ گیا ہے۔لیکن محکمہ برقیات کی عملوں کی محنت اور کوششوں کی وجہ سے ابھی تک کسی بھی علاقے میں کسی قسم کی کوئی لوڈشیڈنگ نہیں ہورہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں فوری طور اس سال مستقبل کیلئے حکمت عملی طے کرنے کیلئے نئی سکیموں کی ضرورت ہے۔کیونکہ موجودہ جنریشن آئندہ دو سالوں تک آبادی کے لحاظ سے کم ہونگے۔جبکہ موجودہ بجلی گھروں کی خرابی کی صورت متبادل نہیں۔ایک سکیم کی تکمیل کیلئے کم از کم 3درکار ہوتا ہے۔لہذا فوری نئی سکیمیں شروع نہیں کی گئی تو بجلی کا بحران جنم لے سکتا ہے۔پچھلے دو سالوں سے کوئی بھی سکیم نہیں بنا۔جبکہ اس سال صرف ایک ہی سکیم پر نیاسلو میں 1.5میگا واٹ بجلی گھر پر کام ہونگے۔جبکہ ہماری طلب اس سے کہی زیادہ ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ شگر میں قائم تمام ٹرانسمیشن لائنیں کافی پرانی اور بوسیدہ ہوچکے ہیں جس کی وجہ سے کافی مقدار میں پاور ضائع ہورہے ہیں۔جبکہ پچھلے سال کی ریکارڈ برفباری کی وجہ سے شگر میں ٹرانسمیشن لائنوں کو کافی نقصان پہنچا۔جس کی وجہ سے محکمہ برقیات کو کافی مالی نقصان کا سامنا ہوا۔جوکہ ابھی پورا نہیں ہوا۔ لہذا اس سال شگر سنٹر سے برالدو ویلی تک نئی ٹرانسمیشن بچھائی جارہی ہے۔اور نئی ٹرانسفرمر کیساتھ گرڈسٹیشن کی قیام بھی عمل میں لایا جارہا ہے۔ جس کے بعد سرپلس بجلی سکردو کیلئے فراہم کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مستقل میں بجلی کی بحران سے نبٹنے کیلئے ڈوگڑو میں دریائے باشہ پر 10میگا واٹ کیلئے فزیبلٹی مکمل ہوچکا ہے جس کیلئے 3ارب65کڑور روپے لاگت آئے گی۔جبکہ دریائے برالدو پر بھی10میگاواٹ بجلی گھر کیلئے پرپوزل بھیجا ہوا ہے۔جبکہ ہو بجلی گھر کی اپ گریڈیشن کرکے2.5میگاواٹ کرنے کیلئے سروے مکمل ہوچکا ہے۔محکمہ برقیات شگر کے انجینئر اور عملے اپنے ذمہ داریاں پوری طرح نبھا رہے ہیں تاہم نئی سکیموں کو اے ڈی پی رکھنا عوامی نمائندوں اورفنڈز فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*