تازہ ترین

سکیورٹی کے نام پر گلگت بلتستان کے عوام میں خوف و ہراس پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

گلگت (پریس ریلیز )سکیورٹی کے نام پر گلگت بلتستان کے عوام میں خوف و ہراس پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ اگر کوئی سی پیک مخالف طبقہ گلگت بلتستان میں داخل ہوا ہے تو اس کو روکا جاتا اخباری بیانات درحقیقت اپنی ناکامی کا اعتراف ہے۔اقتصادی راہداری میں گلگت بلتستان کو حقوق ملتے ہیں تو مستقبل روشن ہوگا حقوق نہ ملنے کی صورت میں ابدی پسماندگی اور غلامی مقدر ہوگی۔اقتصادی راہداری میں گلگت بلتستان کو حقوق دیئے جائے تو شاہراہ قراقرم کی پہرے داری میں گلگت بلتستان کے عوام شانہ بشانہ کھڑے ہونگے۔ان خیالات کا اظہار مولانا سلطان رئیس چئیرمین عوامی ایکشن کمیٹی گلگت بلتستان نے اپنے بیان میں کیا مزید کہا کہ اس وقت تک اقتصادی راہداری میں گلگت بلتستان کو ذرہ برابر حقوق نہیں دییے گیئے ہیں صوبائی حکومت پی ایس ڈی پی کے پراجیکٹس کو اقتصادی راہداری کا لیبل لگا کر گلگت بلتستان کے عوام کو بیوقوف بنانے کی کوشش کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اقتصادی راہداری کے فائدے اور ثمرات وفاق اور گلگت بلتستان کے سانجھے ہیں سی پیک مخالف عزائم کو عوام اپنے اتحاد کے بدولت خاک میں ملائیں گے مگر بد قسمتی سے گلگت بلتستان صوبائی حکومت وفاق سے اپنے حقوق مانگنے کو گناہ کبیرہ سمجھتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اقتصاری راہداری کو مکمل طور پر محفوظ بنانے کا ایک ہی راستہ ہے اور وہ سی پیک میں جی بی کے حقوق کی تعین اور ادائیگی جب گلگت بلتستان کے عوام کو سی پیک میں اپنے حقوق اور مفادات نظر آئینگے تو عوام اپنے طور پر سی پیک مخالف عزائم کو شکست دینگے اس کے علاوہ جتی بھی کوشش کی جائے سی پیک دشمن ممالک کے عزائم ناکام نہیں بنائے جا سکتے۔انہوں نے کہا کہ عنقریب گلگت بلتستان سطح پر اقتصادی راہداری کی حفاظت اور جی بی کے حقوق کے حصول کے بارے آل پارٹیز کانفرنس بلایا جائے گا جس میں تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی جائے گی۔

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*