تازہ ترین

سکردو میں بجلی کے مسلسل لوڈشیڈینگ کی ایک اہم وجہ بے نقاب۔

سکردو(بیورو رپورٹ) باخبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ واپڈا پاور ہاوس ون سکردو اور واپڈا پاور ہاوس ٹو دونوں کا مشینوں کا دس سالوں سے ریپرینگ نہیں ہوا اور دونوں پاور ہاوس کا مشینوں کا انسٹال کرنے والے ملٹی نیشنل کمپنی سی ایم ائی سی کے سی ایم مسٹر لیو ژو نے واپڈا اور محکمہ برقیات گلگت بلتستان سے کہا تھا کہ اس دونوں پاور ہاوس کا دس سالوں سے ریپرینگ نہیں ہوا ہے اور پرانی اور بار بار خراب ہونے والے پارٹس کو تبدیل کرکے نیا پارٹس لگانے کی ضرورت ہے اور دونوں پاور ہاوس کے اوپر اٹھ کروڑ روپے کی لاگت ہے اس طرح دونوں پاور ہاوس پھر سے نیا بن جائے گا اور ہماری کمپنی دوبارہ پاور ہاوس کا مرمت کا کام کرنے کو تیار ہے مگر واپڈا اور محکمہ برقیات کی کھینچا تانی کی وجہ معاملہ گزشتہ جون سے اپ تک لٹکا ہوا ہے اور مشینوں کا مرمت کا لاگت کا تخمینہ واپڈا حکام نے خود لگایا تھا اور دونوں پاور ہاوس اپ پرانی اور مشینوں کا مکمل ریپرینگ نہ ہونے کی وجہ آے روذ فنی خرابی پیدا ہونے کی وجہ سے سکردو کے عوام کو سخت پریشانی اور چوبیس چوبیس گھنٹوں کا لوڈشیڈنگ نے عوام کو زہنی اذیت میں مبتلا کیا ہوا ہے

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*