تازہ ترین

بلتستان ڈویژن پولیس کے جوانوں نے عوامی نمائندوں کے سامنے قراداد پیش کردیا۔ اہم مطالبات۔۔

سکردو(ڈسٹرک رپورٹر) بلتستان ڈویژن کے تمام پولیس جوانوں اورآفیسران کے جانب سے بلتستان ڈویژن کے GBLA نمائندوں کے نام ایک متفقہ قرارداد پیش کرتے ہیں جوکہ درج ذیل نکات پر مشتمل ہے
(1) سال 2004 میں ناردرن ایریا ریزرو پولیس کے نام سے ایک یونٹ قائم ہو کر تا حال ضلع گلگت میں موجود ہیں جبکہ گلگت بلتستان کے باقی تمام ڈسٹرکٹ ریزرو پولیس سے مکمل محروم ہے۔
(2) اسوقت ضلع سکردو کو باقی ضلعوں کی نسبت سب سے ذیادہ پولیس نفری کی ضرورت ہے جس کی مثال سال رواں میں گلگت سے ریزرو پولیس کے 100 سے 200 تک کے نفری گلگت سکردو کے اس خطرناک روڈ پر بڑے بڑے بسوں میں چار سےپانچ دفعہ لے جانا پڑا۔
(3)ایک زمانہ ایسا تھا کہ گلگت میں اکثرحالات خراب ہونے کی وجہ سے نفری کی ضرورت تھی جوکہ اس وقت کئی سال سےپر امن ہے۔
(4) ضلع گلگت میں ڈسٹرکٹ پولیس کےکم وبیش ایک ہزار اہلکار ہونے کے باوجود بلتستان کے پولیس گلگت کے لائنوں,تھانہ جات اور چوکوں میں چوبیس گنٹھےڈیوٹی پر موجود ہے۔
(5)ریزروپولیس میں موجود بلتستان کے پولیس جوانوں کو افسران بالا کے جانب سے چٹھی اور دیگر سہولیات وغیرہ نہ ہونے کی وجہ سے ہر وقت پریشانی کی عالم میں رہتا ہے۔
(6)ریزرو پولیس خنجراب سے بابوسر تک شندور سے سیاچن تک ڈیوٹی دینے کے باوجود ریزرو الاؤنس و دیگر مراعات سے مکمل محروم ہے۔
(7)بلتستان کے پولیس جوان ہمیشہ اپنے گھروں سے دور رہنے کی وجہ سے بچوِں کی تربیت سے مکمل محروم ہے.
(8)ریزرو پولیس میں ہر ایک IGPs صاحبان اپنے اپنے دور میں مختلف قسم کے پالیسیاں مرتب کرتے ہیں جسکی وجہ سے پولیس جوان ہروقت ذہنی و نفسیاتی دباؤ میں رہتا ہے۔
ہم بلتستان ڈویژن کے تمام پولیس جوانوں کی جانب سے بلتستان کے عوامی نمائندوں کو پرزور اپیل کرتے ہیں کہ بلتستان سے تعلق رکھنے والے ریزرو نفری کو سکردو میں رکھنے کیلے ایک مستقل سیٹ اپ بنایا جائے تاکہ بلتستان کے چار اضلاع سمیت جی بی میں کہیں پر ضرورت کے موقعے پر پولیس نفری فراہم کر سکے جس کیلے ضلع سکردو میں ریزرو پولیس لائن کا ایک عمارت جلد از جلد تعمیر کیا جائے اور ہم تمام بلتستان کے پولیس اہلکاران عہد کرتے ہیں کہ کوئی بھی نمائندہ پولیس کی مذکورہ بالا مسائل کو حل کرنے کی صورت میں مرتے دم تک ان کے ساتھ دیں گے۔

About Muhamamd

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*