تازہ ترین

سکردو میں عوامی خدمت گار بدمعاش بن گئے۔

سکردو(ڈسٹرک رپورٹر )سکردو انتظامیہ نے حالیہ ٹیکس مخالف تحریک میں سرگرم رہنماوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ شروع کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلزپارٹی اور سول سوسائٹی سکردو کے اہم رہنما نجف علی کو حکومت اور سرکاری افسران پر تنقید کرنے کے جرم میں تین دفعہ سکردو سٹی تھانہ لے جایا گیا اور چھے گھنٹے تک تھانے میں بند رکھنے کے بعد دوسرے دن تھانے میں حاضری کو یقینی بنانے کی شرط پر رہا کردیا۔کہا یہ جارہا ہے کہ مزید کچھ افراد کے ساتھ بھی یہی رویہ اپنا جائے گا، سول سوسائٹی سکردو حکومتی کی جانب سے پراُمن احتجاج کرنے والوں کے خلاف زبردستی کے ہتکنڈوں کو ریاستی جبر قرار دیا ہے۔ اس سلسلے سوشل میڈیا پر ایکٹیو سوشل ایکٹوسٹ حضرات کی جانب سے انتہائی غم اور غصے کا اظہار کیا جارہا ہے۔ عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ پرُامن احتجاج ہر شہری کا حق ہے اور ہر شہری کو حکومت پر سیاسی تنقید کرنے کا بھی مکمل قانونی اختیار ہے لیکن متنازعہ گلگت بلتستان میں عوامی حقوق کیلئے جدوجہد کرنا جرم بنتی جارہی ہے۔عوامی حلقوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان کے مختلف علاقوں سے یہاں فرائض کی انجام دہی کیلئے آنے والے سرکاری افسران میں سے ذیادہ تر لوگ خود کو اس علاقے کا بادشاہ سمجھتے ہیں اور یہاں کے عوام سے ہر قسم کے معاملات اظہار رائے کی آذادی چھینے کی کوشش کرتے ہیں جو کہ بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔ نجف علی نے اُنکے ساتھ کسی بھی قسم کا واقعہ پیش آنے کی صورت میں اُس کا ذمہ دار مسلم لیگ نون کی حکومت اور وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کو ٹھرایا ہے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*