تازہ ترین

ضلع نگر کے عوام دو ہفتے کا عرصہ گزرنے باوجود بجلی سے محروم۔ ذمہ داران غائب۔

نگر ( بیورو رپورٹ) محکمہ برقیات کی ناقص حکمت عملی یا بے بسی تین ہفتے سے زیادہ عرصہ ہونے کے باوجود مین ٹاؤن ایریاء نگر کو بجلی فراہم کرنے سے قاصر ، مین ٹاؤن ایریاء کے لوگ اندھیروں کے خوف میں مبتلا ہونے لگے ، علاقے میں گھریلو معاملات ،تجارت ،تعلیم ، مواصلات ،صحت اور دیگر زندگی کی دیگر سرگرمیاں ماند پڑ گئیں ۔ علاقے کے لئے محکمہ برقیات نگر بجلی کی مناسب تقسیم اور فراہمی میں یکسر ناکام ۔ عوامی حلقوں کا چیف سیکریٹری ڈاکٹر کاظم نیازسے صورتحال کا نوٹس لینے کی اپیل ۔محکمہ برقیات عامہ کے ماتحت چلنے والے بجلی گھروں سے بجلی سرف مخصوص علاقوں کو فراہم کی جارہی ہے ۔ مین ٹاؤن ایریاء نگر کی عوام کا چیف سیکریٹری کاظم نیاز سے صورتحال کی نوٹس لینے اور بجلی کی فراہمی کا مطالبہ۔ عوامی حلقوں کا بھر پور احتجاج کے لئے اندرون خانہ رابطہ مہم بھی جاری۔ محکمہ برقیات نگر ٹاون ایریاء کو ا س لئے فراہم نہیں کررہی ہے کہ جس علاقے میں بجلی گھر قائم ہیں وہاں کی مقامی آبادی ممکنہ طور پرمحکمہ برقیات کے خلاف کہیں کوئی اقدام نہ کریں ۔ ایسا لگ رہا ہے کہ محکمہ برقیات اپنے سسٹم کے زریعے عوام کو مساوی بجلی فراہم کرنے کے بجائے بجلی گھروں سے متصل علاقوں کے چند افراد کا ممکنہ احتجاج یا کسی بھی اقدام کے خوف سے بجلی نظام صرف انہیں علاقوں تک ہی فراہم کی جارہی ہے ۔ عوامی حلقوں کا کہنا ہے محکمہ برقیات کو چاہیئے کہ وہ ایک نظام رائج کریں جس سے علاقے میں عوام کو مساوی طور پر بجلی کی فراہمی یقینی ہو اور لوڑ شیڈنگ بھی مساوی طور پر کیا جا سکے ۔ حلقے میں ہر بجلی گھر پر حلقے کے ممبر اسمبلی یا حکومتی ادارے کی جانب سے فنڈز استعمال ہوتے ہیں جس میں پورے حلقے کی عوام کا مساوی حق ہوتا ہے ۔ کسی علاقے میں بجلی گھر بننے کا مقصد یہ نہیں ہوتا کہ اس بجلی گھر میں صرف بجلی گھر سے متصل آبادی کے لئے کوئی خصوصی فنڈ فراہم کیاگیاہے ۔ مین ٹاؤن ایریاء نگر کی عوامی حلقوں نے ایگزیکٹیو انجینیرصادق حسین سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ علاقے کے مختلف بجلی گھروں مناپن اور ڈہ لس بجلی گھر سے ہر علاقے کے لئے مساوی بجلی فراہم کرے اور بجلی فراہمی میں رکاوٹیں ختم کریں ۔ عوامی حلقوں نے خدشہ ظاہر کیا کہ کل کو خدا نہ خواستہ اپنے علاقے سے گزرنے والے سڑک ،سکول یا ہسپتال پر وہاں کی مقامی آبادی اضافی اور غیر قانونی سہولیات فراہم کرنے کے مطالبات کرتی رہے گی۔ اس لئے ضروری ہے کہ ہر ادارہ علاقے کی پوری عوام کے لئے اپنا طریقہ رائج کرے اور اسی پر عمل درآمد کرانے کی کوشش کرے ورنہ کار سرکار میں مداخلت سے دیگر مسائل بھی پیدا ہو سکتے ہیں۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*