تازہ ترین

ایس سی او نے اپنے افسران کو تھری جی فور جی کی سہولیات دینے کیلئے آزاد کشمیر کے سیریل والے نمبروں پر تھری جی فور جی سروس چلانے کا انوکھا طریقہ GB میں ایجاد کیا ہوا ہے۔

سکردو(نامہ نگار) ایس سی او کا گلگت بلتستان کے عوام کے ساتھ سوتیلی ماوں جیسا سلوک کیا جارہا ہے متنازعہ علاقہ ازاد کشمیر میں تھری جی فور جی سہولیات دیکر ایس سی او نے سروس گزشتہ کئی ماہ سے چلا رہا ہے اور ایس سی او نے گلگت بلتستان میں عوام کو تھری جی فور جی سروس کا آغاز کیا گیا تھا پھر اچانک راتوں رات سروس بند کیا گیا اور دوسری طرف ازاد کشمیر میں ایس سی او نے تھری جی فور جی سروس چلا رہا گلگت بلتستان کے عوام کو اس سہولیات سے محروم کیا گیا جبکہ ایس سی او کے افسران نے تھری جی فور جی کی سروس سے فائیدہ اٹھانے کیلئے ازاد کشمیر کا ایس کام کا سیم لاکر چلا رہا ہے گلگت بلتستان کے سیریل والے نمبروں پر تھری جی فور جی سروس بند کرکے ازاد کشمیر کے سیریل والے نمبر پر تھری جی فور جی سروس چلانے کا کوئی انوکھا طریقہ ایجاد کیا ہوا ہے اور دوسری طرف ایس سی او افسران اور ایس سی او کے فرنچائز مالکان نے کی ملی بھگت سے سکرو کے غریب عوام کو لوٹ رہا ہے بلیک مارکیٹنگ کے ذریعے کشمیر کے سیریل والا نمبر تین ہزار سے پانچ ہزار روپے میں فروخت کیا جارہا جبکہ ایس سی او حکام کی خاموشی اس کا منہ بولتا ثبوت ہے کی ایس سی او حکام اور فرنچائز مالکان کی ملی بھگت نظر اہا رہا جس طرح ایس سی او نے اپنے فرنچائزز کو کھلا کھلام ازادی سے بلیک مارکیٹنگ کا موقع فراہم کرکے سکردو اور گلگت کے عوام کو لوٹنے کا ازادی دیا ہوا ہے اور ایک اندازے کے مطابق گلگت بلتستان میں اٹھارہ ہزار کشمیر کے سیریل والے نمبر چل رہا ہے سکردو کے باشعور طبقوں نے فورس کمانڈر ایف سی این اے گلگت بلتستان وزیر اعلیٰ سے مطالبہ کیا ہے ایس سی او کی عوام دشمن پالیسیوں کا نوٹس لیا جائے اور فرنچائزز کے خلاف فوری ایکشن لیا اور ارمی چیف پی ٹی اے اعلی حکام سے مطالبہ کیا گیا کی گلگت بلتستان میں جلد از جلد فور جی تھری جی سروس چلانے کیلئے اقدامات اٹھایا جائے متنازعہ علاقہ آزاد کشمیر بھی ہے اور گلگت بلتستان بھی دونوں کو برابری بنیاد پر سہولیات دیا جائے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*