تازہ ترین

سکردو کے صحافیوں کا وومن ڈویلیپمنٹ بلتستان کے دفتر کا دور،سیمال گرانٹ ایمبسیڈر فنڈ پروگرام ۔یو ایس ایڈUSAIID-SGAFP) ( کے مالی مدد سے چلنے والے گارمنٹس میکنگ پراجیکٹ کا دورہ کیا.

سکردو ( خصوصی رپورٹ ) سکردو کے صحافیوں کا وومن ڈویلیپمنٹ بلتستان کے دفتر کا دور،سیمال گرانٹ ایمبسیڈر فنڈ پروگرام ۔یو ایس ایڈUSAIID-SGAFP) ( کے مالی مدد سے چلنے والے گارمنٹس میکنگ پراجیکٹ کا دورہ کیا. وومن ڈویلیپمنٹ بلتستان نے خواتین کو معاشی طور پر مستحکم کرنے کے لیے گارمنٹس میکنگ ’’ہوزری کی صنعت‘‘ میں ٹرینیگ دینے رہہے ہیں۔ وومن ڈویلیپمنٹ بلتستان نے یو۔ایس۔ایڈ (USAID-SGAFP) کی مالی معاونت سے بلتستا ن کے 120 مستخق خواتین کو فیشن ڈیزا ئننگ اور یونیفارم میکنگ کے شعبوں میں پانچ(05) مہینے کی تربیت دی۔ اوراُن کو ہنر مند بنایا تاکہ وہ اپنے ہُنر کے زریعے اپنے لیئے، اپنے کُنبے کے لیئے ،معاشرے کیلئے اور اپنے علاقے کی معشیت کیلئے سہارے کا باعث بن سکے۔
اِس ٹرینیگ کیلئے سکردو کے دویونین کونسل کے خواتین کا چناؤ کیا گیا۔ سکردو میو نسپل کمیٹی ایریا (MC)اور یونین کونسلِ شگری خورد(UC)۔ جس میں سے مستحق اورِ سلائی کڑائی کا بنیاوی تجربہ رکھنے والی خواتین کا اِنتخاب کیا گیا۔اِس ٹر نینگ کے لیئے خواندہ باڈر اِیریا سے جنگ کی وجہ سے نکل مکانی کرنے والی خواتین کو بیوہ، یتیم اور معزُور خواتین کو خصوصی ترجیح دی گئی۔اِس ٹرینیگ کا آغاز یکم جولائی سے شروع کیا گیا اور پانچ ماہ(05) تک ماہر اور تجربہ کار ماسٹر ٹرینز کیِ نگرانی اِن کو تربیت دی گئی۔اِس سیشن کے دوران فیشنِ ڈیزائنگ میں تربیت لینے والی خواتین کوجدید دور کے مطابق ریڈِی میڈ کپڑوں کی ڈیزائننگ،کٹینگ،سِلائی کڑائی اور ایمبرائڈری کی تربیت جدید مشینوں کے زریعے دی گئی۔اِس کے سا تھ ساتھ اِن خواتین کو ہنڈی کرافٹ ( دستکارِی) کے شعبے میں بھی تربیت دی گئی۔جن میں اُن کو مقا می گُل کاری بذریعہ دستکارِی جدید کپڑوں پہ کنندہ کرنے کی تربیت دی گئی۔تاکہ یہ خواتین مقامی دستکارِی اور نقش و نگار کو ’’فیوژن‘‘ کے زریعے جدید کپڑوں پر کنندہ کر کے جدید اور قدیم فیشن کے زریعے ایک نئے ٹرینڈ کو متعارف کر ا سکے اور مقامی اور غیر مقامی خواتین خصوصاًغیرملکی سیاحوں کو متاثر کر سکے۔
وومن ڈویلیپمنٹ نے اپنے یونیفارم مکینگ سنٹر واقع برولمو کالونی ، یونین کونسل شگری خورد (UC)میں(60)خواتین کو پانچ مہینے کی ریڈیمیڈیونیفارم(سکول وردی) کے شعبے میں ٹریننگ دی۔اس ٹریننگ کے دوران اِن خواتین کو پرائیوٹ اور گورنمنٹ سکولوں کے لئے وردیوں خود ڈیزائن کرنے اُن کی کٹنگ اورسلائی کی تربیت ماہر اور تجربہ کار ماسٹر ٹرینرکے زیرِنگرانی جدید مشینوں کے زریعے دی گئی۔ بلتستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ اِن خواتین کو مقامی طور پر پتلون اور شرٹ تیار کرنے کی تربیت دی گئی ۔تاکہ یہ خواتین مختلف سکولوں کے یونیفارم خود تیار کر سکے اور اپنے بنائے ہوئے اِشیاء کو مارکیٹ میں فروخت کر کے معاشی طورپر خود کو مستخکم کرسکے ۔
اِس کے علاوہ پہلی مرتبہ اِن خواتین کو اپنی بنائی ہوئی اِشیاء کی مارکیٹنگ،سیل ا ینڈ پروموشن کے لئے ہوا مارکیٹ سکردو میں ایک سیل پوائنٹ ؍آؤٹ لیٹ ؍دوکان کا بھی بندوبست کیا گیا ہے تاکہ اِن خواتین کو مارکیٹ تک رسائی حاصل ہو ۔ سیمال گرانٹ ایمبسیڈر فنڈ پروگرام ۔یو ایس ایڈ (USAID -SGAFP)کی تعاون سے وومن ڈویلیپمنٹ بلتستان نے اِن خواتین کی تیار کردہ اشیاء (پروڈکٹس) کو متعارف کرانے کے لئے ہر سطح پر اقدامات اٹھائے ۔مقامی سطے پر اِس مقصد کے لئے ڈگری کالج برائے خواتین سکردو میں ایک Exhibitionکا اہتمام کیا گیا جس میں مختلف شعبہ جات زندگی تعلق رکھنے والی شخصیات کو مدعو کیا گیا۔مختلف سکولوں کے پر نسپل اور انچارجنز کو خصوصی دعوت دی گئی ۔تاکہ اِن خواتین کی بنائی ہوئی اِشیاء کو دیکھ سکے اور ایک رابطے کا زریعے بن سکے۔اِس کے علاوہ سکردو کے مقامی گارمنٹس اور بوتیک چلانے والے Vendersکو بھی دعوت دی گئی ۔ اِس Exhibition کا ایک اہم مقصد یہ بھی تھا کہ مقامی تاجران خواتین کی ہُنر کو جان سکے اور ایک باہمی رابطے کے زریعے ایک دوسرے کے کام آسکے ۔اِس کے علاوہ قومی سطح پر اِن خواتین کی بنائی ہوئی اِشیاء کی مشہوری کے لئے اسلام آبادمیں ایک نمائشExhibitionمیں بھی شرکت کی ۔اس نمائش میں ملک کے چاروں صوبوں کے ہُنر مند مرد و خواتین کو مدعو کیا گیا تھا۔جن میں بلتستان کے خواتین کی بنائی ہوئی اشیاء کو بہت زیادہ سراھا گیاخصوصاً فیوژن کے پروڈکس کو ۔
اِن دو نمائشوں کا یہ نتیجہِ نکلاکے مقامی اور غیر مقامی سطح سے لوگ آرڈرزکے زریعے سے اِن اِشیاء کی ڈیمانڈ کر رہے ہیں ۔ اور یہ خواتین اپنی معاشی استحکام کی طرف گامزن ہیں۔
اس پروجیکٹ کے دوران چار وومن انٹرپرائز گروپس تشکیل دی گئی ہیں ۔ اور ان گروپس میں سے 20 خواتین کو پانچ روزہ بزنس منیجمنٹ کی ٹریئرنیئگ دی جائیگی ۔ پرُوجیکٹ کے اختتام پر سامان اور مشینری ان گروپس میں برابر تقسیم کی جائیگی اور چھوٹے سلائی مشین تمام گروپس کے ممبران کو ایک ایک دیا جائیگا۔ہر گروپس یہ فصیلہ کریگا کی وہ سنٹر اپنے گاوں یا خواتین کے لیے نزدیک جگہ پر کوئی ھال کا انتظام کر کے وہاں مل کر کام کرنئگے۔ وومن ڈویلپمنٹ بلتستا ن یہ بات یقینی بنائیگے کہ یہ تربیت یافت خواتین آگے جاکر ان کاموں کو جاری رکھیں گے اور اپنے کمبے کا سہارا بنیں گی۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*