تازہ ترین

معذورں کے عالمی دن اور اسپیشل صوبہ۔ تحریر: ذوالفقار علی کھرمنگی

معذورں کے عالمی دن کے موقعے پر ایک آ رگنائزیشن سے دعوت آئی کہ مہربانی کر کے پچھلے سال کی طرح اس سال بھی ایونٹ کے انتظام کے لئیے ہمارے ساتھ والینٹیر کام کریں.میں نے ہامی بھری اور وقت پر پہنچ کر اپنے حصہ کا کام کیا اور مطمئین ہو کر خدا کا شکر ادا کرتے ہوئے گھر واپس آگیا کیونکہ مجھے خدا نے اس سال بھی توفیق عطا کر دیا تھا کہ میں معاشرے کے ان لوگوں کے کام آ سکوں جن کو معاشرے میں اسپیشل کہتے ہیں.اسپیشل سے یاد آیا اسی دن جب میں تھک کر گھر لوٹا اور سوشل میڈیا کی طرف کچھ لمہے کے رخ کیا تو عجیب نیوز پڑھنے کو ملی.یعنی کہ گلگت بلتستان کو اسپیشل صوبہ بنایا جایا گا.بڑی حیرت میں مبتلا ہوا کھبی نہیں سنا تھا کہ اسپیشل صوبہ بھی ہوتا ہے کیونکہ موصوف خود گریجیویشن کرتے وقت دو سال علم سیاسیات کا طالب علم رہ چکا تھا اور کھبی ایسا نہیں سنا تھا .برطانیہ کا غیر تحریری آئین ہو یا پالمانی نظام’امریکائی صدراتی نظام حکومت ہو یا چینی کمونیسٹ حکمران ہر طرح کے نظام کا مطالعہ کیا ہوا ہے پر کہیں پر ایسا صوبائی نظام نہیں دیکھا.سوچا کسی ملک میں ایسا نظام وجود رکھتا ہو جو بندہ حقیر کو معلوم نہ ہو .کیا تھا اپنی ذہنی استطاعت اس سے ذیادہ نہ تھا مجبوراّ بابائے گوگل سے رجوع کرنا پڑا لیکن وہاں سے بھی کوئی جواب نہ ملا.خیر پھر اپنے چھوٹے سے دماغ پر زور لگایا لیکن کچھ حاصل نہیں ہو پا رہا تھا اسی اثنا معذورں کے آفس سے کال آیا اور جو مجھے والینٹیر سرٹیفکٹ کے لیے بلا ریا تھا تب میری ذہین میں یہ بات سمجھ آئی کہ اسپیشل صوبہ اس دن کی مباسبت سے گلگت بلتستان کے باسیوں کو تخفہ دیا ہے.اف اب مجھ جیسے سوشل ورکر کی ضرورت گلگت بلتستان میں بہت ہو گی کیونکہ حکومت وقت نے پورے معاشرے کے عوام کو اسپیشل پرسن بنا دیا ہے.اور صوبہ کو اسپیشل صوبہ اب یہ کیسے ممکن ہے کہ اس بہت بڑے علاقے کو سنبھال لو.بات طنزیہ یہاں تک پہنچا ہے کوئی مائنٹ مت کر دیجے گا.اب آگے کچھ نہیں کہوں گا کیونکہ مجھے حکومت وقت کے بارے میں کہہ کر اپنے آپ کو فورتھ شیڈول میں ڈالنے کی کوئی خوشی نہیں ہے.میں نے ہمیشہ ایک نعرہ بلند کیا ہے
میں دو قومی نظریے کا حامی لیکن تم بھی تو کچھ خیال کرو.میں بھی ان 95℅ لوگوں میں شامل ہوں جو آج بھی اس نظریے یعنی نظریہ پاکستان و نظریہ اسلام کے حامی ہیں.

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*