تازہ ترین

گلگت بلتستان مکمل طور پر پاکستان کا آئینی صوبہ کیوں نہیں بن سکتا؟ سابق آئرمارشل کے کتاب میں اہم انکشاف۔

اسلام آباد( خصوصی رپورٹ) گلگت بلتستان کے عوام پچھلے ستر سالوں سے پاکستان کا مکمل آئینی صوبہ بننے کے خواہاں ہیں یہاں پاکستان میں شامل ہونے کیلئے تحریک زور پکڑتی جارہی ہے لیکن وفاق کی جانب سے سوائے وعدوں کے آج تک گلگت بلتستان کے عوام کو کھل نہیں بتایا کہ ایسی کونسی مجبوری ہے جس کی وجہ سے گلگت بلتستان کو پاکستان میں شامل نہیں کیا جاسکتا۔ گلگت بلتستان میں ایک طبقے کا خیال ہے کہ گلگت بلتستان کے عوام نے چونکہ پاکستان سے الحاق کیا تھا لہذا اُس الحاق کو قبول کیا جائے اور کشمیر سے ہٹ کر گلگت بلتستان کو مکمل طور پر صوبہ بنایا جائے لیکن یہ ایک تاریخی حقیقت ہے کہ اُس الحاق کے حوالے سے کسی کے پاس کوئی ثبوت نہیں اور پاکستان اس بات سے انکار کرتے ہیں یہی وجہ ہے کہ 28 اپریل 1949 کو پاکستان کے وزیر کی موجودگی میں آذاد کشمیر کے حکمرانوں نے گلگت بلتستان کو ریاست جموں کشمیر کا حصہ قرار دیکر مسلہ کشمیر کی حل تک کیلئے پاکستان کے زیر انتظام دے دیا لیکن گلگت بلتستان کا مذہبی طبقہ اس حوالے سے بلکل غافل نظر آتا ہے۔ گلگت بلتستان کی حیثیت کے حوالے سے سابق آئرمارشل(ر) مسعود اختر اپنی کتاب (تشخص کا بحران) کے صفحہ نمبر 78 میں گلگت بلتستان کو مکمل طور پر پاکستان میں شامل کرنے کے حوالے سے اپنے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے لکھتے ہیں کہ” گلگت،بلتستان کی خود اختیاری کا ماڈل صیح سمت کی جانب ایک چھوٹا سا قدم ہے۔لیکن یو این سیکورٹی کونسل کی قراداوں کے حوالے سے مشکلات پیدا کرسکتا ہے۔ یہ یو این میں ہمارے کشمیر کیس کو کمزور کرسکتا ہے کیونکہ 2009 پیکج ماڈل میں گلگت بلتستان کو پاکستان کا حصہ ظاہر کیا گیا ہے۔لہذا دونوں حصوں کو مکمل خود اختیاری اور باقی صوبوں کے برابر حقوق ملنے چاہئیں۔

About admin

One comment

  1. وزیر اعلی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن صاحب اور چیف سیکرٹری گلگت بلتستان ڈاکٹر نیازکاظم صاحب سے درمندان گزارش ہے کہ یونین کونسل کتی شو. مہدی آباد. پندہ. غاسینگ.اخونپہ .منٹھو کھا. مادھوپور. گوہری . ہلال آباد تک کے عوام کو مدنظر رکھتے ہوے ضلع کھرمنگ کے ہیڈ کواٹر کو گوہری میں ہی بنایا جائے نوٹیفکشن اور ڈی سی آفس کا بھی ٹینڈر گوہری میں ہونے کی باوجود بھی عوام کے ساتھ ناانصافی کررہے ہیں ورنہ عوام نے ضلع کھرمنگ کا بھی پہیہ جام کرنے پر مجبور ہونگے

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*