تازہ ترین

سرفہ رنگا کی زمینیں مختلف سرکاری اداروں کو الاٹ کر نے کا انکشاف،اہلیان شگر نے حکومت کو دھمکی دے دی۔

شگر(عابدشگری)عمائدی سرفہ رنگاشگرحسنین میر اور دیگر نے کہا ہے کہ اہلیان سرفہ رنگا پر زمین تنگ کی جارہی ہے اور ہماری چراگاہ کا 80فیصد زمین مختلف اداروں کو الاٹ کر نے کے بعد ہمیں بے دخل کر نے کی کوشش کی جارہی ہیں ۔ہماری خاموشی کو ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے ورنہ نتائج اچھا نہیں ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ لینڈ ریفام تک بلتستان یونیورسٹی 2010 کے سائیڈ سلیکشن کو برقرار رکھا جائے، سائیڈ سلیکشن کو تبدیل کرنے سے ہماری چراگاہ مکمل ختم ہو جائے گی،ہماری چراگاہ کا 80فیصد زمین مختلف اداروں کو الاٹ کر نے کے بعد ہمیں بے دخل کر نے کی کوشش کی جارہی ہیں اب تک ھماری چراگاہ سے 12621 کنال اراضی الاٹ ہوچکا ہے جس میں سے 20 فیصد پر عملدرآمد نہیں ہواجبکہ باقی سائیڈ سلیکشن کر کے اداروں کے حوالے کر دیا ہے جس میں 1971 کے مہاجرین کو6000کنال ایرکرافٹ 1031 کنال اراضی کے آئی یو کیمپس 500 کنال بلتستان یونیورسٹی کو 1000 کنال اراضی وغیرہ شامل ہے لینڈ ریفارمز کمیشن سے سکردو میں ملاقات کے دوران ہمیں یقین دہانی کرائی گئی تھی کہ لینڈ ریفارمز تک ھماری چراگاہ کو مکمل تحفظ دیں گے لیکن موجودہ صورتحال اس کے برعکس ہے۔ اگر ایسا سلسلہ برقرار رہا ہم ہم اہلیان سرفہ رنگا نہ صرف سخت احتجاج کرنے پر مجبور ہونگے بلکہ اپنے حق کیلئے عدالت عالیہ کا دروازہ کھٹکھٹایا جائے گا۔

  • 166
  •  
  •  
  •  
  •  
    166
    Shares
  •  
    166
    Shares
  • 166
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*