تازہ ترین

کرپشن اور کمیشن خور وزیر اعلیٰ اور وزراء کا مقدر جیل ہوگی۔صوبائی سیکریٹری اطلاعات سعدیہ دانش

گلگت (ٹی این این) پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کی صوبائی سکریٹری اطلاعات سعدیہ دانش نے کہا ہے کہ حفیظ الرحمٰن کا دورۂ دیامر مکمل طور پر ناکام رہا اضلاع کے قیام کا اعلان ٹوپی ڈرامہ سے زیادہ کچھ نہیں.چند غیر منتخب افراد کی بدزبانی کی بدولت وزیر اعلیٰ نہ گھر کے رہے ہیں نہ گھاٹ کے۔حفیظ الرحمٰن کو چار سال کرپشن اور کمیشن خوری سے فرصت نہیں ملی اور انہوں نے دیامر کو مکمل طور پر نظر انداز کیا۔آرڈر 2018 کے نفاذ کے بعد اضلاع کا نوٹیفکیشن صوبائی حکومت کا نہیں بلکہ وفاق کا سبجیکٹ ہے۔وزیراعلیٰ کی کرپشن اور اقرباء پروری کی بدولت انکے اپنے صوبائی وزراء اور اراکین اسمبلی نے بھی ساتھ چھوڑ دیا ہے۔وزیر اعلی آخری سال میں دیامر کے عوام کو بے وقوف بنانے کی ناکام کوشش کر رہے ہیں۔حفیظ سرکار نے داریل اور تانگیر کے عوام کو مایوسی کے علاوہ کچھ نہیں دیا.صوبائی حکومت میں دراڑیں پڑنا شروع ہوچکی ہیں وزراء اور اراکین اسمبلی کی اکثریت حفیظ الرحمٰن کے ون مین شو سے بے زار ہے اور اختلافات آہستہ آہستہ کھل کر سامنے آنے لگے ہیں.انہوں نے مزید کہا کہ حفیظ الرحمٰن نے چار سالوں میں چند بدعنوان ٹھیکیداروں اور آفیسروں کے ذریعے جائدادیں بنانے کے سوا کچھ نہیں کیا۔حفیظ الرحمٰن اور ان کرپٹ آفیسران کا جلد یا بہ دیر جیل جانا یقینی ہے۔چار سالوں میں وزیر اعلی نے جو کچھ بویا ہے وہ انکے گلے کا طوق بن جائے گا وزیر اعلی جن آفیسروں سے مل کر بدترین کرپشن کر کے اپنے رشتہ داروں اور پارٹنرز کو نواز رہے ہیں اور ان سے اپنا حصہ بٹور رہے ہیں وہ سب وعدہ معاف گواہ بن کر انہیں جیل کی راہ دکھائیں گے گلگت بلتستان میں بڑے بڑے پراجکیٹ شروع کرنے کے دعوے داروں نے کرپشن کے ناقابل شکست ریکارڈ قائم کئے ہیں وزیر اعلی اور وزراء اس غلط فہمی میں ہیں کہ انکو کوئی پوچھنے والا نہیں ہے.حفیظ الرحمٰن کو کرپشن نواز شریف سے سیاسی وراثت کے طور پر ملی ہے۔گلگت بلتستان میں جو انت مچائی گئی ہے اور اداروں کو تباہ کیا گیا ہے اسکی تاریخ میں کوئی نظیر نہیں ملتی۔اسں لئے بہت جلد یہ کرپٹ مافیا بھی اپنے بدعنوان قائد نواز شریف کی طرح نشان عبرت بن جائے گا اور اقتدار کا گھمنڈ خس و خاشاک بن کر اڑ جائے گا۔حفیظ الرحمٰن کا ایک ہی منشور ہے کمیشن دو ٹھیکے لو.بدعنوانی کے بے تاج بادشاہ اور جعلسازی کے شہنشاہ گلگت بلتستان کے عوام کے ساتھ نوسربازی,ہیرا پھیری اور سرقہ بازی میں لگے ہوئے ہیں.گلگت بلتستان کی عوام ان سے تمام بدعنوانیوں کا حساب لے گی اور وزیراعلی کرپٹ وزراء اور انکے حواریوں کا مقدر جیل ہوگی. حکومت کے 4 سال صرف کرپشن لوٹ کھسوٹ اور اقربا پروری کا بازار گرم کر کے اب آخری سال اضلاع کے دورے کر کے ہوائی اعلانات کے زریعے عوام کو سبز باغ دکھانے کی کوششیں حکومتی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہیں

  • 10
  •  
  •  
  •  
  •  
    10
    Shares
  •  
    10
    Shares
  • 10
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*