تازہ ترین

ایس سی او کی 3جی4 جی اور کارگردگی کی حوالے سے تہلکہ خیز انکشافات اور پی ٹی اے کی سیاحت دشمن پالیسی پر تحریر نیوز کی خصوصی رپورٹ

گلگت (ٹی این این خصوصی رپورٹ) ایس سی او انٹرنیٹ سروس کی فراہمی میں مکمل ناکام ہو چکی ہے عوامی حلقوں کے اندر اس ادارے کی کارکردگی کے حوالے سے شدید تحفظات پائی جاتی ہیں اور ایس سی او کی کارکردگی پر سوالیہ نشان آٹھایا جارہا ہے اس کے باوجود ان کو کھلی آزادی دیکر گلگت بلتستان کے غریب عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے کا موقع فراہم کیا جانے پر پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی کے خلاف عوامی حلقوں میں سخت نفرت پائی جاتی ہے اور ایس سی او کو اس حوالے سے نہ وفاقی حکومت پاکستان نہ ہی ٹیلی کام اتھارٹی ان سے پوچھ بھی نہیں سکتا ہے اور ایس سی او گلگت بلتستان میں جنگل کے بادشاہ کی طرح بنا ہوا ہے اور لاقانونیت قائم کیا ہوا ہے اور ملکی اہم ترین ادارے کو ایس سی او کی وجہ سے عوام کے دلوں میں نفرت ابھر رہا ہے اس دور جدید میں گلگت بلتستان کے عوام کو تھری جی فور جی کی اہم سہولیات سے دور رکھا ہوا ہے اور ایس سی او کے سامنے پورا ملک کا قانون بے بس نظر اتے ہیں اور گلگت بلتستان میں پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی سے بغیر اجازت برائے نام تھری جی فور جی سروس چلا تو رہا ہے مگر انٹرنیٹ سپیڈ دیگر کمپنیوں کے ٹو جی کے مقابلے میں نہیں ہے اور سب سے بڑا مسلہ موبائل نیٹ ورک سروس ہے اور صرف ٹاور کے قریب ہی موبائل نیٹ ورک کا سگنل اتا ہے جبکہ دو قدم دور جانے کے بعد سگنل بڑی مشکل سے دو تین فیصد اتا ہے بار بار کال منسوخ ہوتا ہے اور ساتھ ہی صاف آواز بھی سن نہیں سکتا ہے باخبر زرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ایس سی او کا ٹاوروں میں 18 ویں صدی کے مشینری لگا ہوا ہے جس کی وجہ سے سگنل اور موبائل فون پر کال کرنے میں مسائل کا سامنا ہے ایس سی او اپنی معیار کو بہتر بنانے کے بجائے فالتو ایس ایم ایس تواتر کے ساتھ جاری رکھے ہوئے ہیں معیاری سروس نہ ہونے اور مواصلاتی نظام میں خلل سے پیغام رسانی میں بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ایک تو پیکچز کافی مہنگا دوسری طرف ناقص کارکردگی سے صارفین ایس ای او سے بد دل ہوتی جارہی ہے فور جی تھری جی سروس نے رہی سہی کسر نکال دی ڈی ایس ایل کی بار بار بندش کی شکایت پر صارفین کو آپٹیک فائبر کٹنے کا آسان بہانہ بنایا جاتا ہے جبکہ ماہانہ پیکج مقررہ وقت پر ختم ہو جاتی ہے جوکہ صارفین کے ساتھ بڑی زیادتی ہے آئی ٹی شعبے میں ماہر لوگوں کا کہنا ہے ایس ای او کی موجودہ پیکجز دیگر کمپنیوں سے کافی مہنگا اور ناقص ہے لہٰذا انہیں اپنے سروس کے مطابق پیکجز دینی چاہیے اس سلسلے میں انٹرنیٹ صارفین کا کہنا ہے کہ مذکورہ ادارہ معیاری سروس کی فراہمی میں بری ناکام نظر آتے ہیں ۔ صارفین کا مزید کہنا ہے کہ دنیا فائیو جی کی سہولتیں فراہم کر رہی ہے جبکہ گلگت بلتستان کے عوام معیاری انٹرنیٹ سروس کے لئے ترس رہے ہیں اور پاکستان کے پورے شہروں میں 2014.2015 سے باقاعدہ تھری جی فور جی سروس کا اغاز یوچکا ہے اور گلگت بلتستان کو اپ تک اس سہولیات سے محروم رکھنا ناانصافی ہے اور ایس سی او جو سروس چلا رہا وہ برائے نام اور چوری چھپے چلارہا ہے تجرباتی بنیادوں پر چلا رہا ہے موجودہ وفاقی حکومت نے سیاحت کی فروغ کیلئے جو دعویٰ کیا جارہا ہے اس کیلئے گلگت بلتستان میں تھری جی اور فوری جی کا آغاز کرنا انتہائی ضروری ہے جو سیاح گلگت بلتستان کا رخ کرتے ہیں ان کو سب سے زیادہ پریشانی تھری جی فورجی کی سروس نہ ہونے کی وجہ سے پیش اہا رہا ہے اس سلسلے میں سیاحت کا سیزن شروع ہوچکا ہے وفاقی حکومت کو ہنگامی بنیادوں پر تھری جی فور جی کی سہولیات فراہم کرنا چاہئے ہیں پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کو چاہیے کہ گلگت بلتستان کے اندر دیگر ٹیلی کمیونیکیشن کمپنیوں کو لائسنس جاری کریں تاکہ معیاری انٹرنیٹ سروس کی سہولیات عوام کو میسر آ سکے مقابلے کے اس دور میں کسی کی اجارہ داری قائم نہیں ہونی چاہیے

  • 143
  •  
  •  
  •  
  •  
    143
    Shares
  •  
    143
    Shares
  • 143
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-ISB

2 comments

  1. SCO GSM has the best network in the GB there. Its combination of great 4G coverage, reliability and speed make it the best phone carrier among all.

  2. I am the witness of best 3G, 4G services in gilgit baltistan in my last visi
    Infact, no telco offers such data services in all gilgit baltistan.

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*