تازہ ترین

ڈسٹر ک ہیڈکوارٹر ہسپتال سکردو کا چوکیدار بن گیا تھانیدار،مریضوں کی استحصالی عروج پر۔

سکردو(ٹی این این) ڈسٹرک ہیڈکوارٹر ہسپتال سکردو میں بلتستان کے چاروں اضلاع سے مریض علاج کی غرض سے آتے ہیں لیکن اس سرکاری ہسپتال میں کبھی ڈاکٹروں عدم موجودگی اور کبھی سفارشی بنیاد پر علاج معالجہ اور ادویات کی فراہمی اور ڈاکٹروں کی جانب سے سرکاری ہسپتال میں علاج کے بجائے ذاتی کلینک پر ریفر کرکے لوٹنامعمول بن چُکی ہے لیکن کوئی پوچھنے والا نہیں۔
اسی طرح ہسپتال میںلوئر لیول کے ملازمین کی اپنی الگ حاکمیت ہے جنہیں ہسپتال کے میڈیکل سپرنڈنٹ تک کا خوف نہیں جسکی وجہ کرپشن اور من مانی میں ملی بھگت بتایا جاتا ہے۔ تفصیلات کے مطابق آج ایک غریب شخص اپنے کسی بیمار عزیز جنہیں ہسپتال سے فارغ کیا تھا ،وہاں لینے گیا تو وارڈ کا دروازہ اندر سے بند تھا جسے کھٹکھٹایا تو اندر سے چوکیدار غصب ناک انداز میں باہر آیا پھر بھی سائل نے مہذبانہ انداز میںکہا کہ میں فلاں مریض کو لینے آیا ہوں مجھے اندر جانے دیں یا مریض کو باہر بیج دو جس پر چوکیدار بلاوجہ سے آپے سے باہر ہوگیا۔
ہمارے نمائندے نے اس تمام صورت حال کو کیمرے میں قید کر لیا کیونکہ چوکیدار نے نہ صرف مریض کو لینے والے شخص کو زدکوب کیا بلکہ خواتین کے سامنے غیر اخلاقی باتیں کی جس پر احتجاج کیا تو چوکیدار نے کہا میرا تعلق( کھرگرونگ) سکردو کا ایک گاوں سے ہے کوئی میرا کچھ نہیں بگاڑ سکتا یہاں تک کہ ایم ایس بھی میرے لئے کوئی حیثیت نہیں رکھتے۔ہسپتال کے چوکیدار کے اس روئے نے نہ صرف وہاں موجود مریضوں کو پریشان کیا بلکہ ہسپتال انتظامیہ کی نااہلی کو بھی عوام کے سامنے واضح کردیا کہ بلتستان کے سب سے بڑے ہسپتال میں چوکیدار اس قدر بے لگام ہے تو اعلیٰ افسران کا کیا حال ہوگا۔
عوامی حلقوں نے وزیر صحت اور چیف سیکرٹیری سے متعلقہ چوکیدار کے خلاف کاروائی کرنے اور ہسپتال کے ماحول کو عوام دوست بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔

  • 472
  •  
  •  
  •  
  •  
    472
    Shares
  •  
    472
    Shares
  • 472
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*