تازہ ترین

وزیر بلدیات اور پارلیمانی سیکرٹیری گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کے حلقے کا عوام پتھروں کےزمانے میں۔

استور(ٹی این این) سوشل میڈیا پر کل سے وائرل ایک ویڈیو کے مطابق گلگت بلتستان کا دور افتادہ سیاحتی حوالے سے مشہور وادی استور کے بالائی علاقوں کا کئی عرصے سے گاڑیوں کا زمینی راستہ منقطع ہے جس کی وجہ سے علاقہ مکین مریضوں کو اپنی مدد آپ کے تحت کئی کندھوں پر میلوں کا سفر طے کرنے پر مجبور ہیں۔ کہا یہ جارہا ہے کہ یہ علاقہ مسلم لیگ کے رہنماوں وزیر بلدیات رانا فرمان علی اور پارلیمانی سیکرٹیر ی پارلیمانی سیکرٹری ہیلتھ برکت جمیل کا ہے اور سوشل میڈیا پر عوامی حلقوں کی جانب سے کہا جارہا ہے ان دنوں نے کبھی بھی دور افتادہ علاقوں کے مسائل کی طرف توجہ ہی نہیں دی بلکہ سرکاری فنڈز کی بندبانٹ اور نوکریوں میں من پسند افراد کی بھرتیوں کے علاوہ کچھ کام کیا ہی نہیں۔
مقامی ذرائع کے مطابق ایک مریض جس کا تعلق استور کے بالائی علاقہ ضلعے بالا کے گاوں مرمئی  سے ہے جس کو کل رات اچانک فالج کا دورہ پڑا اور اہل علاقہ نے سہولت نہ ہونے کی 10 فٹ برف اور روڈ بند ہونے کی وجہ سے اپنی مدد آپ کے تحت دیسی طریقے اسٹیچر بناکر بیس میل پیدل رٹو تک لے جایا گیا جہاں ڈاکر ہی موجود نہیں تھے۔ متاثرہ شخص کے ساتھ موجود افراد نے ہمارے نمائندے سے خصوصی بات کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ پی ڈبلیو ڈی نے کئ دفعہ اس بالا سڑک کو کھولنے کی یقین دھانی کرائی مگر تاحال عملی طور پر کوئی کام نہیں کیا۔ اُنکا یہ بھی کہنا تھا کہ چند روز قبلسڑک کو بحال کرنے کی ایک ناکام کوشش کی گئی مگر مشنیری کی خستہ حالی کی وجہ سے نا کامی ہوکر واپس استور چلی گئی۔
اہل علاقہ نےحکومت سے پڑزور اپیل کیا ہےکہ جلد از جلداستور بالا سڑک کو کھول کر عوام کی جان و مال کا تحفظ یقینی بنایا جائے ورنہ عوام اپنا احتجاج کا حق محفوظ رکھتی ہے۔

یہ منظر گلگت بلتستان کے خوبصورت سیاحتی مقام وادی استور کا ہے جہاں ضلعی انتظامیہ کی نااہلی اور عدم توجہ کی وجہ سے ضلعے بالا کا روڈ بروقت نہ کھلنے کی وجہ سے لوگ شدید مشکلات کا سامنا کر رہے ہیں جبکہ دوسری طرف آج گاؤں شنکرگڑھ میں ایک شخص شدید بیمار ہونے کی وجہ سے لوگ اپنے کندھوں پر اٹھا کر اسپتال منتقل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں.

Posted by Tehreer News Network on 2019 m. kovo 17 d., sekmadienis

  • 13
  •  
  •  
  •  
  •  
    13
    Shares
  •  
    13
    Shares
  • 13
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*