تازہ ترین

ڈی ایچ کیو ہسپتال چلاس میں سہولیات کا فقدان،دیامر یوتھ مومنٹ ، علماء کونسل نے تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔

چلاس:(شفیع اللہ قریشی)دیامر یوتھ مومنٹ اور دیامر یوتھ علماء کونسل کا ایک اہم مشترکہ اجلاس منعقد ہواجس کی قیادت دیامر یوتھ علماء کونسل کے صدر مولانا عبد المالک نے کی ا جلاس میں صدر یوتھ مومنٹ شبیر احمد قریشی ,مفتی حفیظ اللہ،مفتی محفوظ الرحمن،مفتی مصباح اللہ،شریف شاہ،ادریس سالک،مولاناشیر زادہ اشرفی ودیگر علماء کرام اور دیامر یوتھ کے کارکنان نےکثیر تعداد میں شرکت کی۔اجلاس کے دوران کہا گیا کہ چلاس ڈی ایچ کیو ہسپتال کے ساتھ چند ایک اپنی سیاست اور تعصب کی مداخلت کرکے یہاں کے عوام کے ساتھ کھلام کھلا زیادتی کرریے ہیں.گلگت بلتستان میں سب سے زیادہ مصروف ترین ہسپتال ڈی ایچ کیو چلاس ہے جو سیاحت پر براجمان علاقے کی خدمت کے ساتھ ساتھ جگلوٹ سے لیکر کوہستان تک اور چلاس سے لیکر ناران تک ہیلتھ کی سہولیات فراہم کررہا ہے,اس کے باوجود بھی یہاں ہونے ہوالے زیاتی کی شدید مزمت کی گئی,اجلاس کے دوران کہا گیا ہے کہ محکمہ صحت گلگت بلتستان کی طرف سے ڈی ایچ کیو ہسپتال چلاس میں کی جانے والی ناانصافیوں کی بھرپور انداز میں نہ صرف مذمت کی گئی بلکہ یہاں ہونے والے ناانصافیوں کے خلاف اور مطالبات جی منظوری تک تحریکیں چلانے کی بھی دھمکی بھی دی گئی اورکہا گیا کہ حالیہ ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ہسپتال چلاس کے بجٹ میں کی جانےوالی کٹوتی اور 24 ڈاکٹروں میں سے صرف 4سپیشلسٹ ڈاکٹروں کی موجودگی لمحہ فکریہ ہے,انھوں نے کہا کہ ہسپتال چلاس سے تنخواہ لیکر دیگر اضلاع میں ڈیوٹی دینے والے تمام اسپیشلسٹ ڈاکٹروں کو فی الفور چلاس ڈی ایچ ہسپتال میں حاضر کیا جائے اور انکی حاضریوں کو بھی یقینی بنایا جائے,انھوں نے کہا کہ ڈائریکٹر ہلتھ دیامراستور ڈویژن کو ڈائریکٹر ہلتھ سکردو ڈویژن کیطرح بااختیار بنایا جائےتاکہ دیامر کے اندر ہسپتالوں کے مسائل ڈائریکٹر کے نگرانی میں احسن طریقے سے حل کراسکے,اجلاس میں کہا گیا کہ ڈائریکٹر ہلتھ پلاننگ گلگت بلتستان اکرام کا رویہ دیامر ہیڈ کواٹر ہسپتال کے حوالے سے انتہائی متعصبانہ ہے ،لہٰذا وہ اپنے رویے میں تبدیلی لاکر جلد قبلاع درست کریں جس کی وجہ سے علاقے میں عوام کے اندر احساس محرومی کا شکار ہے,نیشنل نیو ٹریشن سروے N-N-S جوکہ جی بی کے دیگر اضلاع میں مکمل ہوچکا ہے جبکہ دیامر کو تعصب کی بنیاد پر سروے سے محروم رکھا گیا ہے,انھوں نے مذید کہا کہ حکومت وقت جلد از جلد N-N-S نیشنل نیوٹریشن سروے میں شامل کر کے دوبارہ دیامر میں سروے شروع کیا جائے,اجلاس کے آخر میں حکومت کو ایک ہفتے کا ڈیڈ لائن کی گئی,کہا گیا ہے کہ حکومت کو ایک ہفتے کی مہلت دیتے ہیں کہ ایک ہفتے کے اندر اندر بالا تمام مطالبات کو منظور کیا جائے،مطالبات کو منظور نہ کرنے کی صورت میں دیامر یوتھ علماء کونسل اور دیامر یوتھ مومنٹ عوام دیامر سے ملکر احتجاجی مظاہرے اور تحریک چلائی جائیں گی,جس کی تمام تر ذمہ داری حکومت وقت پر ہوگی,آئندہ لائحہ عمل سخت ہوگا جس کا دائرہ کار وسیع ہوگا.

  •  
  • 5
  •  
  •  
  •  
  •  
    5
    Shares

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*