تازہ ترین

سیاحت کی فروغ کا دعویٰ،تبدیلی سرکار گلگت بلتستان میں انٹرنیٹ سروس کی فراہمی میں غیر سنجیدہ۔

سکردو(ٹی این این) پاکستان میں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت بننے کے چھ ماہ بعد بھی گلگت بلتستان کے عوام کو انصاف نہیں دے سکا اور پاکستان نے اپنے شہریوں کو 2015 سے تھری جی فور جی سہولیات دے چکا ہے اور گلگت بلتستان میں اپ تک پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی نے اجازت نہ دینے پر زونگ ٹیلی نار یوفون اور دیگر موبائل کمپنیوں نے تھری جی فور جی سروس شروع نہیں کر رہی ہے جبکہ پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی سے چوری چھپے گلگت بلتستان میں ایک لوکل کمپنی ایس سی او کا موبائل کمپنی ایس کام نے برائے نام عوام کو دھوکہ دینے کیلئے تھری جی فور جی کے نام سے ٹو جی کے برابر ست رفتار سروس چلا رہے ہیں اور وہ دنیا کا مہنگا ترین انٹرنیٹ پیکیج کے ساتھ چلا کر عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہا ہے۔ گلگت بلتستان کے عوام کا پاکستان تحریک انصاف کی حکومت سے بڑی توقعات تھے کی عمران خان کو گلگت بلتستان کا گلی گلی پتہ ہے اور یہاں کے عوام کے مسائل سے بھی اگاہ ہے اس وجہ سے یہاں کے عوام کو سہولیات فراہم کرنے کیلئے اقدامات کرینگے مگر چھ ماہ کا عرصہ گزرنے کے باوجود تھری جی فور جی کی سروس سے محروم رکھا کر متنازعہ علاقے کے عوام کے دلوں میں مذید احساس محرومیاں پیدا کی جارہی ہے۔ گلگت بلتستان کے سول سوسائٹی کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ ایک طرف حکومت نے گلگت بلتستان میں غیر مُلکی سیاحوں کو بغیر کسی این او سی کے داخلے کی اجازت دی ہے لیکن سیاحوں کی اولین ضرورت تھری اور فور جی انٹرنیٹ سے گلگت بلتستان آج بھی محروم ہیں۔ سوشل میڈیا پر بھی اس حوالے سے صارفین کی جانب سے سہولیات کی انتظامات کے غیرمُلکی سیاحوں کو داخلے کی اجازت مُلک کی بدنامی کا سبب بن سکتا ہے کیونکہ اس وقت دنیا کے غریب ترین ممالک نے بھی عوام کو انٹرنیٹ کی سروس فراہم کی ہوئی ہے،سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے مطالبہ کیا جارہا ہے کہ حکومت فوری طور پر گلگت بلتستان میں سروس فراہم کرنے والے تمام نجی کمپنیوں کو انٹرنیٹسروس شروع کرنے کی اجازت دیں ۔ اسی طرح سیاحت کی فروغ کے ساتھ ماحولیاتی آلودگی کو کنٹرول کرنے اور سیاحتی مقامات پر صفائی کے انتظام صاف پانی کو گندی سے بچانے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کریں کیونکہ مقامی حکومت کی جانب سے اس حوالے سے بھی اب تک کوئی انتظا م نہیں کیا گیا ہے۔

  •  
  • 93
  •  
  •  
  •  
  •  
    93
    Shares

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*