تازہ ترین

اب انصاف گھر کی دہلیز پر،گلگت بلتستان کے تمام اضلاع میں پولیس کمپلئن سیل قائم کرنے کا فیصلہ۔

گلگت ( پ ر ) انسپکٹر جنرل پولیس گلگت بلتستان ثناءاللہ عباسی کی سربراہی میں پولیس هیڈ کوارٹرز میں ایک اہم میٹنگ ہوئی.جس میں عوامی شکایات سیل کے طریقہ کار پر بریفنگ دی گئی .پولیس سربراہ کو آگاه کیا گیا کہ گلگت بلتستان کے تین رینجز کے تمام اضلاع میں دس (10) ڈسٹرکٹ کمپلیئن آفیسران تعینات ہونگے . کمپلیئن سیلوں میں 98 کے قریب سٹاف ہونگے. انکوائری آفیسران کے لئے سہولیات بھی میسر ہونگیں. بریفنگ میں بتایا گیا کہ اگر کوئی شکایت بائی هینڈ، ای-میل ،فون یا پاکستان سٹیزن پورٹل کے زریعے موصول هوتی هے تو آٹھ گھنٹے کے اندر شکایت کنندہ انکوائری آفیسر سے رابطہ کرے گا جہاں اسے شکایت کے ازالے کا وقت سے آگاہ کیا جائے گا اور شکایت کے حل هونے اور نہ هونے سے متعلق بھی بتایا جائے گا. ڈی آئی جی کرائم سمیت تینوں رینجزکے ڈی آئی جیز اور تمام اضلاع کے ایس پیز کے ٹیلیفون نمبروں اور ای-میل پر شکایات کا اندراج کرایا جاسکتا ہے .تین کمپلیئن سیلوں کا قیام عمل میں لایا گیا ہے. جن میں آئی جی پی کمپلیئن سیل ، ڈی آئی جی کمپلیئن سیل اور ڈسٹرکٹ کمپلیئن سیل شامل ہیں. آئی جی پی کمپلیئن سیل کے انچارج ڈی آئی طرح کرائم هونگے. جو سی پی او کی سطح پر تمام شکایات پر ایکشن لے گا. پی ایم ڈی یو کی طرف سے ملنے والی شکایات بھی منیج کرے گا. اور آئی جی پولیس کو روزانہ کی بنیاد پر پراگرس سے متعلق آگاہ کرے گا. اگر کوئی شکایت کنندہ رینج شکایات سیل یا ڈسٹرکٹ شکایات سیل کی کاروائی سے مطمئن نہیں ہو تو آئی جی پی شکایات سیل اس کی کاروائی کرے گا. تینوں رینجز کے ڈی آئی جیز اپنے ماتحت اضلاع میں شکایات پر کی جانے والی کاروائی کو مانیٹر کرینگے اور ڈی آئی جی کرائم کو روزانہ آگاہ کریں گے. بریفنگ کے دوران آئی جی پی ثناءاللہ عباسی کو بتایا گیا کہ جنوری 2019 میں ایف آئی آر درج نہ کرنے، بےگناہ کو گرفتار کرنے اور غلط ایف آئی آر کے اندراج وغیرہ کے کل آٹھ شکایات موصول ہوئیں جن میں سے چار شکایات کا ازالہ کیا گیا تین پر کارروائی جاری ہے جبکہ ایک شکایت جهوٹی ثابت ہوئی.

  •  
  • 9
  •  
  •  
  •  
  •  
    9
    Shares

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*