تازہ ترین

گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والا طالب علم پنجاب میں قتل،طلباء سراپا احتجاج۔

لاہور(ٹی این این) گلگت بلتستا ن کے وادی استور سے تعلق رکھنے والے طالب علم کا اغواء کے بعد قتل کے خلاف لاہور میں گلگت بلتستان کے طلبہ نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ تفصیلات کے مطابق روالپنڈی اقراء کالج میں سیکنڈ ائر کےطالب علم اعجاز علی چند روز پہلے راولپنڈی سے غائب ہوگیا تھا بعدازاں اُنکا تشدد زدہ لاش گوجر خان سے برآمد ہوئی لیکن حکومت پنجاب نے قاتلوں کی گرفتاری کے حوالے سے ابھی تک کوئی مثبت قدم نہیں اُٹھایا۔ مقتول طالب علم کے قاتلوں کی گرفتاری اور لواحقین کو انصاف دلانے کیلئے آج چار بجے لبرٹی گول چکر لاہور میں گلگت بلتستان کے طلبہ کی جانب سے ایک احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں درجہ ذیل مطالبات پیش کئے گئے۔۔
چند روز قبل اغوا ہونے والے گلگت بلتستان کے طالب علم اعجاز علی جسے تشدد کے بعد قتل کیا گیا، جسد خاکی گجر خان سے ملی ہے اس واقعے کی مکمل انکوری کرائی جائے اور قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے تاکہ آئندہ کے بعد اس طرح کے واقعات کی روک تھام ممکن ہو۔۔
گلگت بلتستان میں معیاری تعلیمی انفراسٹیکچر کا قیام عمل میں لایا جائے تاکہ ہمارے نوجوان پاکستان کے دیگر شہروں میں دربدر ہونے سے محفوظ ہوسکے۔
پنجاب پولیس اگر آنے والے اتوار تک مجرموں کی گرفتاری عمل نہیں لاتے ہیں تو اتوار کو پنجاب اسمبلی کے سامنے دھرنا دیا جاے گا۔
طلباء نے وزیرعلیٰ گلگت بلتستان چیف سکرٹیری گلگت بلتستان سے بھی پرُزور مطالبہ کیا ہے کہ قاتلوں کی گرفتاری کے حوالے سے محکمہ داخلہ پنجاب سے رابطہ کرکے قاتلوں کی گرفتاری کو یقینی بنائیں،مظاہرین کا یہ بھی مطالبہ تھا کہ اس وقت چونکہ پنجاب میں تحریک انصاف کی حکومت ہے لہذا گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال مقپون کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اس ظلم کے خلاف اپنے اثررسوخ کا استعمال کرتے ہوئے مقتول کو انصاف دلانے کیلئے کردار ادا کریں۔

  •  
  • 15
  •  
  •  
  •  
  •  
    15
    Shares

About TNN-GB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*