تازہ ترین

وزیر اعظم کا سخت شرائط ماننے انکار، آئی ایم ایف کےساتھ مذاکرات بغیر کسی نتیجے کے ختم۔

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان قرض کے لیے جاری مذاکرات ختم ہو گئے۔ فریقین اپنے اپنے موقف سے ڈٹے رہے۔ پاکستان نے چین کے ساتھ مالی معاونت کی تفصیلات دینے سے صاف انکار کر دیا۔ وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف نے مذاکرات کے بعد الگ الگ اعلامیہ جاری کیا۔
پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات کا آخری دور وزارت خزانہ میں ہوا۔ ذرائع کے مطابق فریقین اپنے اپنے موقف پر قائم رہے جس کے باعث چھ سے آٹھ ارب ڈالر کے بیل آوٹ پیکج پر پیش رفت نہ ہوسکی۔ پاکستان نے چین سے ملنے والی مالی معاونت کی تفصیلات دینے سے انکار کرتے ہوئے واضح کیا کہ ڈالر کی قدر میں مزید اضافہ نہیں کیا جاسکتا۔دوسری جانب آئی ایم ایف اور وزارت خزانہ نے مشترکہ اعلامیے کے بجائے اپنا اپنا اعلامیہ جاری کیا تاہم اس بات اتفاق کیا گیا ہے کہ قرض پروگرام کے لیے مذکرات جاری رہیں گے۔حکومت پاکستان معاشی نظم و ضبط اور شفافیت بڑھائے گی جبکہ ٹیکس اور معاشی اصلاحات پر بھی اتفاق کیا گیا۔ آئی ایم ایف وفد بائیس نومبر کو اپنی حتمی سفارشات پاکستان کے حوالے کرے گا۔
یاد رہے وزیراعظم نےوزیر خزانہ کو عالمی مالیاتی ادارے کی سخت شرائط نہ ماننے کا کہا تھا، میڈیا روپورٹ کے مطابق وزیراعظم نے مذاکرات کےآخری دور سے قبل وزیر خزانہ اور اعلیٰ افسران سے کہا آئی ایم ایف کی ٹیکس بڑھانے سمیت دیگر کڑی شرائط نہ مانیں۔ عمران خان نے ٹیکس اور معاشی اصلاحات جبکہ معیشت کو دستاویزی بنانے کی شرائط ماننے پر اتفاق کیا تاہم جی ایس ٹی 18 فی صد کرنے اور 150 ارب روپے کے نئے ٹیکس لگانے سے انکار کر دیا۔

  •  
  • 7
  •  
  •  
  •  
  •  
    7
    Shares

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*