تازہ ترین

وزیر تعلیم گلگت بلتستان کے حلقے میں سہولیات سے محروم سرکاری اسکول کی طالبات سراپا احتجاج۔

گانچھے(تحریر نیوزنیٹ ورک) وزیر تعلیم گلگت بلتستان ابراہم ثنائی کے حلقہ غواڑی کے عوام اپنے ہی نمائندے کی ذیادتی اور تعصب کا شکارہونے کی وجہ سے بنیادی تعلیم سے محروم ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ہائی گرلز ہائی اسکول غواڑی کے کچھ کمرے گرمیوں کے موسم سے ٹوٹ پھوٹ کے شکار تھے اور ان کمروں کی از سر نو تعمیر کیلئے حکومت کی جانب سے 5 لاکھ 70 ہزار فنڈزمنظور ہونے کے باوجود ٹھیکدار کی من مانی سےسیزن ختم ہونے سے پہلے تعمیر نہ ہوسکا۔ اہل علاقہ کے مطابق متعلقہ ٹھیکدار پیسہ بچانے کیلئے اس معمولی سی پراجیکٹ کو بھی لوکل سطح پر سب کنٹریکٹر کے ذریعے خراب کمروں کے تعمیر کی کوشش کرتے رہے لیکن وہ بھی ممکن نہیں ہوئی اور سردیا ں آگئی۔ اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ اس اسکول کی بچیاں گرمیوں کے موسم میں بھی کھلے آسمان تلے تعلیم حاصل کرنے پر مجبور تھی اور اب سردیاں آنے کے بعد بھی اُنہیں سخت سردی میں کھلے آسمان تلے بٹھائی جاتی ہے جو کہ بیماری کا سبب بن سکتا ہے۔ اہل علاقہ نے الزام لگایا ہے کہ وزیر تعلیم گلگت بلتستان ابراہیم ثنائی ایک طرف پورے گلگت بلتستان میں تعلیمی انقلاب کا دعویٰ کرتے ہیں جبکہ اُن کا حلقہ آج بھی ہر لحاظ سے تعصب کے شکار ہیں یہی وجہ ہے کہ اس گرلز ہائی اسکول میں کئی بار مطالبات کے باوجود ایک بھی سائنس کے ٹیچر موجود نہیں جبکہ ضرورت سے ذیادہ اسلامی تعلیمات کے استاد یہاں تعین کی ہوئی ہے۔ اہل علاقہ کا کہنا تھا کہ غواڑی میں اسلامی تعلیم کا کوئی مسلہ نہیں کیونکہ مرکزی دارلعلوم میں بنیادی اسلامی تعلیم بلکل مفت دی جاتی ہے لیکن سرکاری اسکول میں جس سبجیکٹ کیلئے اساتذہ درکار ہے وہ آج تک تعین نہیں کیا گیا۔
وزیر تعلیم ابراہم ثنائی کی اس تعصابانہ سوچ اور روئے سے تنگ آکر آج غواری گرلز ہائی اسکول کی طالبات اپنے مطالبات کیلئے سڑکوں پر نکل آئی اُنکا کہنا تھا کہ ابراہیم ثنائی ووٹ لینے کیلئے مذہب اور مسلک کا خوب تڑکا لگاتے ہیں لیکن تعلیم جیسے بنیادی سہولیات سے غواڑی کو ایک سازش کے تحت نظرانداز کیا ہوا ہے ، مظاہرے شامل طالبات کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کے دیگر اضلاع میں بچوں سکول و کالجز پونچانے کیلئے سرکاری سطح پر ٹرانسپورٹ کی سہولت میسر ہے جبکہ غواڑی کے اس سکول میں گینتھا سے لیکر غلوکھور تک کی بچیاں پیدل مسافت طے کر کے تعلیم حاصل کرنے آتی ہے مگر حکومت سمیت نمائندے کی مجال کہ ایک عدد بس فراہم کریں۔بچیوں نے شکوہ کیا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت میںوزیر تعلیم سیکرٹیری بلکہ پارلیمانی سیکرٹیری کا تعلق بھی ضلع گانچھےمگر کسینے غواڑی والوں پہ اک نظرنہیں کیا یہاں تعلیم کے علاہ بھی بے پناہ مسائل ہیں جسکا کوئی پرسان حال نہیں۔
مظاہرے میں شامل طالبات نے گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال مقپون وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن اور چیف سیکرٹیری گلگت بلتستان بابر حیات تارڑ سے مطالبہ کیا ہے کہ وزیر تعلیم کے اس تعصبانہ روئے کے خلاف ایکشن لیں اور غواڑی گرلز اسکول کے مسائل کی حل کیلئے عملی اقدام اُٹھائیں۔

  •  
  • 27
  •  
  •  
  •  
  •  
    27
    Shares

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*