تازہ ترین

ضلع کھرمنگ میں ضلعی انتظامیہ اور محکمہ تعمیرات عامہ کی آمریت کا افسوسنا ک واقعہ۔

کھرمنگ(قاسم قاسمی)محکمہ تعمیرات عامہ کھرمنگ نے عوامی املاک پر زبردستی قبضہ کرنا شروع کردیا۔ تفصیلات مطابق گزشتہ ہفتے کھرمنگ منٹھوکھا بجلی گھر سے متصل ایک وسیع عوامی بندوبستی رقبے کو یہ کہہ کر زبردستی ہتھیانے کی کوشش کی گئی کہ اس بجلی گھر کے احاطے میں پورے کھرمنگ کیلئے ایک مین بجلی گھر تعمیر کرنا ہے۔واقع نگار وں کے ضلعی انتظامیہ کھرمنگ کی ملی بھگت سے محکمہ تعمیرات عامہ کے عہدے داران نے اُنہیں سرکاری نرخ نامے سے بڑھ کر معاوضہ ساتھ میں ملازمت دینے کی آفر کی لیکن زمین مالک نے انکار کردیا۔ مالک زمین کا کہنا تھا کہ میں سرکاری ملازم ہوں اور مجھے مزید نوکری اور ذیادہ پیسوں کے بجائے اپنی زمین عزیز ہے لیکن ضلعی انتظامیہ نے اُن کی ایک نہ سُنی اور زبردستی کھرمنگ سنٹرل بجلی گھر کی تعمیر کیلئے بنیاد رکھ دیا۔زمین کے مالک نے علاقے کے عمائدین سے مشاورت کے بعد اسپیکر گلگت بلتستان اسمبلی فدا محمد ناشاد سے رابطے کا فیصلہ کرتے ہوئے اس تمام معاملے میں مداخلت کرتے ہوئے زبردستی تعمیر روکنے کا مطالبہ کیا، مالک زمین چونکہ ماضی سے لیکر آج تک ناشاد کے ووٹر رہے ہیں اور اُنہوں نے فوری طور پر ایکشن لیتے ہوئے مداخلت کی اور سنٹرل بجلی گھر کی تعمیر کا کام روک دیا۔ عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ یہ تو خوش قسمت شخص تھا جنہیں فدا ناشاد کی سفارش حاصل تھی لیکن اگر اُن کی جگہ کوئی اور ہوتے تو حکومت نے بندوبستی زمین پر قبضہ کرلینا تھا ۔عوامی حلقوں کا کہنا ہے کہ نوازئدہ ضلع میں سرکاری اداروں کے عوام سے اس قسم کی ذیادتی سنگین جرم اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے ، عوامی حلقوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ایک طرف خالصہ سرکار کی غلط تشریح کرکے عوامی املاک لوٹا جارہا ہے دوسری طرف بندوبستی زمینوں پر بھی ذیادہ معاوضہ کے نام پر قبضہ اس بات کو ثابت کرتی ہے کہ ضلع بننے کے باوجود عوامی خواہشات اور قانون اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں ضلعی انتظامیہ کیلئے کوئی بڑی بات نہیں۔ یہ بھی واضح کرتا چلوں کہ ضلع کھرمنگ میں کچھ دن قبل بارڈر کے نواحی گاوں مرول میں بھی محکمہ تعمیرات کی جانب سے خالصہ سرکار قرار دے کر عوامی چراگاہ کو ہتھیانے کی کوشش کی جا رہی ہے جبکہ یہ گاوں لائن آف کنٹرول کا حساس علاقہ ہے یہاں ضلعی انتظامیہ کے اس طرح کی غلطیاں عوام کو اشتعال پھیلانے کے مترادف ہیں اور اس طرح کے واقعات پر اگر ویڈیو وائرل ہوتی ہے تو فائدہ پاکستان دشمن عناصر اُٹھا سکتا ہے لہذا ضلع کھرمنگ میں کوئی ایسا کام نہ کریں جس میں عوامی حقوق سلب کیا جارہا ہوں۔کھرمنگ انتظامیہ جان بوجھ کر عوامی املاک کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں جب ان ظلم ذیادتیوں کے خلاف آواز بلند کرنے والوں کو شیڈول فور اور قیدوبند کی دھمکیاں دیتے ہیں۔

  •  
  • 48
  •  
  •  
  •  
  •  
    48
    Shares

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*