تازہ ترین

ضلع کھرمنگ کے دو اہم سیاحتی مقامات حکومت اور انتظامیہ کی بے حسی کا شکار، عوام اور سیاح دونوں پریشان۔

سکردو(نامہ نگار) گلگت بلتستان کو سیاحوں کی جنت کہتے ہیں لیکن سہولیات کی عدم دستیابی اس صنعت کیلئے ایک بڑا چیلنج ہے جسکا ادارک کرنے والا کوئی نہیں۔ کچھ ایسے ہی مسلے سے نومولود ضلع کھرمنگ کے سیاحتی مراکزبھی دوچار ہیں۔ کھرمنگ میں و یسے تو سیاحت کے حوالے سے بیش بہا قدرتی مواقع موجود ہیں لیکن پچھلے کئی سالوں سے منٹھوکھا آبشار اور خاموش آبشار سیاحت کے حوالے سے پہچانے جاتے ہیں لیکن ان دونوں مقامات پر سہولیات بلکل نہ ہونے کے برابر ہیں اس وجہ سے یہاں سیاحوں کے ساتھ مقامی آبادی کو بھی پریشانیوں کر سامنا کرنا پڑھ رہا ہے۔ کیونکہ ان دونوں مقامات پر صفائی کا کوئی انتظام نہیں جوکہ ماحولیاتی آلودگی کا سبب بن رہا ہے، اور نہ ہی متعلقہ تھانے کی طرف سے مناسب سکیورٹی کا کوئی انتظام کیا ہوا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ باہر سے آئے ہوئے اوباش لڑکوں کی شیطانیاں اور حرکتوں نے علاقے کی خواتین کیلئے راہ چلنا مشکل کیا ہوا ہے جوکہ معاشرتی قدار کی پامالی ہے۔ منٹھوکھا ندی جہاں سے پورے علاقے کے لوگوں کو پانی سپلائی کیا جاتا ہے لیکن آبشار پر باتھ روم اور سوریج کا مناسب انتظام نہ ہونے کے سبب ندی کا پانی مضر صحت بنتا جارہا ہے جو آنے والے وقتوں میں مزید خطرناک صورت حال اختیار کرسکتا ہے۔ ہمارے نمائندے نے اس حوالے وہیں ہوٹل پر کام کرنے والے کارکن نے جاننا چاہا تھا معلوم ہوا کہ سیوریج لائن نہ ہونے کے سبب باتھ روم اور کچن کے گندے پانی کو ندی میں چھوڑا ہوا ہے جوکہ انسانی جانوں کے ساتھ کھیلنے کے مترادف ہیں۔ محکمہ صحت ماحولیات اور سیاحت کے ذمہ داران کو اس حوالے سے تحقیقات کرکے ایکشن لینے کی ضرورت ہے۔

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*