تازہ ترین

گلگت بلتستان کا آئینی مسئلہ دوچار وفاداروں کو نوازنے کانام نہیں بلکہ 70سالہ محرومیوں کا ازالہ ہے۔مولانا سلطان رئیس

اسلام آباد(تحریر نیوز نیٹ ورک)گلگت بلتستان کا آئینی مسئلہ دوچار وفاداروں کو نوازنے سے حل نہیں ہوگا اس بار گلگت بلتستان کے عوام 70سالہ محرومیوں کا ازالہ کرتے ہوئے مکمل اختیارات دینے ہونگے.گلگت بلتستان کے عوام نے ریاست کے مفاد ہمیشہ اپنے مفادات کا خون کیا ہے مزید متحمل نہیں ہو سکتے ہیں کہ انکے صبر کا امتحان لیا جائے لہذا کمیٹیوں کے بتی کے پیچھے لگانے کی بجائے مسئلہ کشمیر میں ریاستی موقف کو متاثر کیئے بغیر مکمل طور پر اندرونی خودمختاری دی جائےان خیالات کا اظہار مولانا سلطان رئیس چئیرمین عوامی ایکشن کمیٹی نے اپنے بیان میں کیا انہوں نے مزید کہا کہ حالیہ دنوں سپریم کورٹ آف پاکستان میں زیرسماعت سے خدشہ ہے کہ سینٹ اور قومی اسمبلی میں نمائندگی کے نام دوچار مزید وفاداروں کو نوازنے کیلئے سرتاج عزیز کمیٹی کے سفارشات پر عملدرآمد کیلئے راہ ہموار کی جارہی ہے.لہذا سرتاج عزیز کمیٹی کے سفارشات کو فوری طور پر پبلک کیا جائے اور اس پر عوامی رائے عامہ معلوم کرکے اسکے مطابق اقدامات اٹھائے جائیں.سرتاج عزیز کمیٹی کے سفارشات گلگت بلتستان کے عوامی مفادات میں ہوئے تو خندہ پیشانی سے قبول کریں گے وگرنہ چند افراد کو نوازنے کیلئے کسی اقدام کو قبول نہیں کیا جائے گا.انہوں نے مزید کہا کہ گلگت بلتستان آئینی اور سیاسی جماعتوں کا اجتماع السلام آباد میں ہونا معنی خیز ہے گلگت بلتستان کے معاملات کو گلگت بلتستان میں عوام کے سامنے عوامی اعتماد سے حل ہونے چاہیئے.انہوں نےکہا کہ اس بارے بہت جلد عوامی ایکشن کمیٹی آئیندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریگی.

  •  
  • 185
  •  
  •  
  •  
  •  
    185
    Shares

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*