تازہ ترین

ضلع کھرمنگ میں حکمران جماعت بھی محکمہ تعلیم کے افسران سے نالاں۔ ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن کو ہٹانے کا مطالبہ۔

کھرمنگ (سکندر علی زرین) مسلم لیگ ن نے ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن غلام محمد حیدری کو ہٹانے کے لئے کمر کس لی. وزیر اعلی حفیظ الرحمان کو تحریری شکایت کر دی. ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن کھرمنگ کے فوری طور پر تبادلے کی قرارداد پیش کر دی. حفیظ الرحمان نے پارٹی عہدیداروں کا مطالبہ منظور کرنے کی یقین دہانی کرا دی. گزشتہ دنوں مسلم لیگ ن کھرمنگ کے کثیر الرکنی وفد نے سکردو میں وزیر اعلی حفیظ الرحمان سے ملاقات کی تھی. وفد میں شامل ن لیگ کھرمنگ کے ذمہ دار عہدیدار اور متحرک رہنما نے نمائندہ سلام کو بتایا کہ پارٹی کی پوری تنظیم نے وزیر اعلی سے زور دیکر مطالبہ کیا ہے کہ ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن غلام محمد حیدری کو فی الفور ہٹایا جائے. جتنی جلدی ممکن ہو ضلعے کے نائب ناظم تعلیمات کا تبادلہ کیا جائے. لیگی رہنما کے مطابق پارٹی کی طرف سے وزیر اعلی کو باقاعدہ تحریری قراراداد پیش کی گئی ہے. قرارداد پر پارٹی کے ضلعی رہنما حاجی اسماعیل, عباس حافظی, منشی محمد علی, ماسٹر درویش, شبیر, فضل, حاجی حسین اور دیگر کے دستخط موجود ہیں. غلام محمد حیدری کو فوری ہٹانے کا مطالبہ پوری مسلم لیگ ن کھرمنگ کا ہے. مذکورہ لیگی رہنما کا کہنا تھا وزیر اعلی نے ن لیگ کھرمنگ کے مطالبے کو منظور کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے. متعلقہ محکمے کو ضروری ہدایات جاری کرنے کا وعدہ کیا ہے. ان کا مزید کہنا تھا مسلم لیگ ن سمجھتی ہے کہ ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن نے تعلیمی نظام تباہ کے کر رکھ دیا ہے. کھرمنگ کے سکولوں کے نتائج نا گفتہ بہہ ہیں. اساتذہ کے غیر ضروری طور پر تبادلے کئے گئے. پوری پارٹی کو ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن کے اقدامات پر شدید تحفظات ہیں. ان کا کھرمنگ سے تبادلہ نا گزیر ہو چکا ہے. یاد رہے رواں تعلیمی سال کے آغاز پر ڈپٹی ڈائریکٹر غلام محمد حیدری نے کھرمنگ میں 162 اساتذہ کے تبادلے کئے تھے. سالہا سال سے ایک ہی سٹیشن پر تعینات کئی اساتذہ بھی تبادلے کی زد میں آئے تھے. علاوہ ازیں سکردو شہر میں ڈیوٹی دینے والے کھرمنگ کے با اثر خاندانوں سے تعلق رکھنے والے اساتذہ کو ضلعے میں حاضر ہونے پر مجبور کیا تھا. ذرائع کا کہنا ہے بڑے پیمانے پر اساتذہ کے تبادلے کے بعد ڈپٹی ڈائریکٹر ایجوکیشن مقامی سیاسی کارکنوں اور رہنماوں کو کھٹکنے لگے. نہ صرف سیاسی حلقوں بلکہ محکمہ تعلیم میں بھی غلام محمد حیدری کے خلاف سازشیں تیار ہونے لگیں. دلچسپ بات یہ ہے وزیر اعلی حفیظ الرحمان, وزیر تعلیم ابراہیم ثنائی اور وزیر منصوبہ بندی اقبال حسن کم و بیش ہر دوسرے روز اس دعوے کا اعادہ کرتے نظر آتے ہیں کہ محکمہ تعلیم کو سیاسی مداخلت سے پاک کیا جا چکا ہے. تمام اضلاع میں سیاسی کارکنوں کی پسند نا پسند سے بالا ہو کر تعلیمی پالیسی پر عمل کیا جا رہا ہے, تاہم عملی طور پر ایسا ہوتا دکھائی نہیں دیتا. چند ہفتے قبل ڈپٹی ڈائریکٹر شگر نزیر شگری کا ٹرانسفر کیا گیا تھا. معتبر ذرائع کے مطابق اس کے پیچھے بھی ن لیگ کے ضلعی صدر کی انا اور “ذاتی خار” شامل تھے.

  •  
  • 2
  •  
  •  
  •  
  •  
    2
    Shares

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*