تازہ ترین

سینئر وزیر اکبر تابان کی من مانی سے تین اضلاع کے عوام پریشان، چیف سیکرٹیری سے نوٹس کا مطالبہ۔

سکردو( نامہ نگار) سکردو اولڈینگ کورو کے مقام پر ضلع کھرمنگ ،گانچھے اور شگر سے آنے والے تمام گاڑیوں کا روک دیا جاتا ہے۔یہاں سے کسی بھی مال بردار گاڑی کو بازار جانے کی اجازت نہیں۔مسافرین کو بازار جانے یا زار سے واپس کورو اڈے پر آنے کیلئے بھی خصوصی طور پر ٹیکسی کرنا پڑتا ہے۔ یہاں تک گاڑیوں کو سامان لادنے کیلئے بھی بازار جانے کی اجازت نہیں ،اگر کوئی گاڑی والا بچ بچا کر بازار پونچنے میں کامیاب ہو جائے اور ٹریفک پولیس کے ہتھے چڑھ گیا تو پولیس کا رویہ انتہائی ہتک امیز رویہقانون بن گئی۔یہاں تک بازار سے سواری بٹھانے یا بیٹھنے کے جرم میں خواتین اور بچوں کے ساتھ پولیس کی بدتمیزی اور گاڑی سے زبردستی اُتار کر اڈے کیلئے ٹیکسی کے ذریعے جانے پر مجبور کرنے کے واقعات معمول بن گئی ہے۔
ذرائع کے مطابق گزشتہ الیکشن میں سکردو اولڈینگ کورو کے عوام نے موجودہ سنئیر وزیر حاجی اکبر تابان کو اس شرطپر ووٹ دیا تھا کہ وہ جیت جانے کی صورت میں کورو میں تین اضلاع کیلئے مستقبل اڈا قائم کریں گے اور یہاں سے کسی بھی گاڑی کو بازار جانے نہیں دیا جائے گا۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ اس کی بنیادی وجہ کورو کے عوام اس علاقے کے زمینوں کی قیمت بڑھانا اور کورو تجارتی مرکز بنانا چاہتے ہیںتاکہ کورو سکردو کا تجارتی مرکز بن جائے۔ یہی ہوا کہ اکبر تابان نے جیتنے کے بعد پہلا کام تین اضلاع کےعوام کو تنگ کرنے کی ٹھان لی اور بازار جانے کیلئے خصوصی اجازت نامےکا قانون بنایا جو کہ ایک پرچی ہے جس کے ذریعے بلدیاتی فیس لیا جاتا ہے،اُسی پرچی وہاں ڈیوٹی پر مامور ٹریفک اہلکار دستخطکرکے گاڑیوں کو صرف سروس کی غرض سے بازار جانے کی اجازت دی جاتی ہے۔
ہمارے نمائندے نے موقع پر موجود کئی مسافرین سے اس حوالے معلوم کیا تو لوگوں نے شکایتوں کے انبھار لگا دیئے۔ مسافرین کا کہنا تھا کہ عوام تو عوام مریضوں کو بھی ایمرجنسی کی صورت میں ہسپتال پونچانے کی اجازات نہیں ہے ۔ عوام کا کہنا تھا کہ اکبر تابان کی من مانی سے تین اضلاع کے عوام اس میدان میں خوار ہوتے ہیں یہاں کسی قسم کا سہولت میسر نہیں ساتھ ہی ٹیکسی والے بھی یہاں سے بازار جانے کیلئے من مانی کے کرائے وصول کرتے ہیں لیکن تینوں اضلاع کے عوامی نمائندوں نے بھی اس حوالے سے کان بند کئی ہوئی ہے۔
عوام نے چیف سیکرٹیری گلگت بلتستان سے بھی شکوہ کیا ہے کہ وہ دو مرتبہ بلتستان کے دورے پر آئے مگر خواص میں رہ کر عوامی مسائل کی طرف توجہ دئے بغیر واپس چلے گئے۔ عوام نے مطالبہ کیا ہے کہ اکبرتابان کے اس من مانی کا ایکشن لیں۔

  •  
  • 24
  •  
  •  
  •  
  •  
    24
    Shares

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*