تازہ ترین

عامر لیاقت کو کشمیرکمیٹی کا چیر مین بنانا ریاست جموں کشمیر کی پیٹھ میں چھرا گھونپنے کے برابر ہے۔ سید عباس کاظمی

سکردو(پ،ر)ملک کے معروف صحافی حسن نثار نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی قیادت ڈاکٹر عامر لیاقت کو کشمیر کمیٹی کے خالی چیر مین شپ پربراجمان کرنے لئے سوچ رہی ہے ۔ اس خبر پر تحریک انصاف گلگت بلتستان کے سینیررکن اور ڈپٹی صوبایی کنوینر سید محمد عباس کاظمی نے شد ید احتجاج کرتے ہوے کہا ہے ۔اگر یہ خبر درست ہے تو اس کا یہ مطلب ہو اکہ جناب عمران خان جیسا حقیقت پسند وزیر اعظم سابقہ چور لٹیرے اور نا اہل وزرائے عظمیٰ کی طرح ریاست کشمیر کے شہریوں اور کشمیر کاز جو کہ پاکستانی سیاست کہ شہ رگ ہے کو کسی ڈسٹ بن کا کوڑا سمجھ رہے ہیں ۔جب کہ یہ ایک عالمی مسئلہ ہے اورریاست کشمیر کی آزادی کے لئے پاکستان کے ہزاروں فوجی جوانوں اور افسران کے علاوہ اورہزاروں شہریوں نے اپنی جانو ں کے نذرانے دئے ہیں اور اپنے بچوں کو بدترین انصافیوں اور ظلم و جبرسے بھری دنیا میں بے سہارا چھو ڑ گئے ہیں۔پاکستانی اور ریاست کشمیر کے مختلف اقوام کی اس عظیم قربانیوں کو یوں نظر اندازکرنا کہ ان کے معاملات سے متعلق ایک بہت ہی اہم منصب پر عامر لیاقت حسین جیسے مسخرا اور بغیر پیندے کے لوٹے کو تعین کیا جائے ۔ ہمیں یقین تو نہیں آتا کہ عمران خان صاحب جیسا دانشور اور میرٹ کو اولیت دینے والا لیڈر صرف اپنے پارٹی کا ممبر ہونے کے حوالے یا ٹاپ کلاس خوشامدی شخص کو کشمیر کمیٹی کا چیرمین منتخب کرے کا جس کے خود تو ایک طرف بلکہ اس کی سات پشتوں میں سے کسی ایک کا بھی نہ تو ریاست کشمیر کی سرزمین کے ساتھ کوئی خونی تعلق یا کوئی ہمدردی تھااورنہ عامر لیاقت حسین کو مسئلہ کشمیرکے ا لف اورب کا پتہ ہے ۔البتہ وہ کشمیر کمیٹی کاچیر مین بن کر اس عالمی مسئلہ کے حل کے لئے اقوام متحدہ کے سٹیج پر الٹی سیدھی حرکتیں کر سکتا ہے اور شاید اس کی پرفار منس کی بناء پر دنیا میں پاکستان کی واہ واہ بھی بہت ہو۔ یہ بات سب کے سامنے ہے کہ پاکستان کی سابقہ حکومتوں اور سیاسی پارٹیوں نے ـ’’ مسئلہ کشمیر‘‘ کی اہمیت کو کم کرتے رہے اور کبھی کبھار کشمیر کے مظلوم باشندوں اور پاکستانی عوام کو بیوقوف بنانے کا لئے اس مسئلہ کا ذکر کرتے رہے ہیں۔جس نے بھارت کو اس ریاست پر اپنا قبضہ مضبوط سے مضبوط کرنے کا جواز فراہم کیا۔ بھلا عمران خان صاحب قوم کو یہ بتائے کہ اپنے ایک بڑے ہمسایہ ملک بھارت سے ستر سالہ دشمنی اور تین بڑی جنگوں کے علاوہ لاتعداد جھڑپوں کی وجہ کیا تھی ۔ اگر عمران خان صاحب کو معلوم نہیں ہے تو میں بتاتا ہوں کہ اسن سب دشمنی اور جنگوں کی واحد وجہ کشمیر پر بھارت کا ناجائز قبضہ اور اس ریاست کے باشندوں پر ان کا وحشیانہ ظلم ہی تو ہیں۔گر کشمیر کمیٹی اور اس کی سربراہی کشمیر اور کشمیریوں سے متعلق نہیں اور اسے ایک مذاق کے طور پر بنایا گیا تھاتو اب اس ریاست کے کسی باخبر باشندے کے بجائے اس عہدے اس مسخرہ لوٹے کو ہی متعین کرنا ہے تو اس سے بہتر ہے کہ اس کمیٹی اور عہدے کو ہی ختم کردیا جائے تاکہ جس پاکستان کو لٹ لٹا کر آپ کے حوالے کیا گیا ہے اس فضول کشمیر کمیٹی کے زاید اخراجات سے تو بچ سکے۔ بہر حال اس دفعہ عمران خان صاحب نے کسی غیر ریاستی شخص کو اس عہدے پر فائز کیا تو یہ اس متنازعہ ریاست کے باشندوں کے ساتھ کھلی زیادتی ہوگی۔

  • 4
  •  
  •  
  •  
  •  
    4
    Shares
  •  
    4
    Shares
  • 4
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*