تازہ ترین

کیا تحریک انصاف گلگت بلتستان میں عوامی جماعت بن پائے گی؟۔ اسپیشل تجزیاتی رپورٹ۔

گلگت ( تجزیاتی رپورٹ)تحریک انصاف گلگت بلتستان کیا عوامی جماعت بن پائے گی یا رائل فاونڈیشن گلگت بلتستان اس پر حاوی رہے گی۔راجہ جلال مقپون صوبائی صدر تحریک انصاف گلگت بلتستان ہیں۔ اسکے ساتھ ساتھ راجگان گلگت بلتستان کی خاندانی تنظیم رائل فاونڈیشن جیبی کے اہم اور کلیدی رکن بھی ہیں۔ گلگت بلتستان کے اکثر علاقوں میں راجگی کا نظام ماضی میں رائج تھا۔ جسے پیپلز پارٹی کے بانی اور چیرمین شہید ذوالفقار بھٹو نے ختم کیا تھا۔تحریک انصاف کے صوبائی صدر راجہ جلال مقپون ویسے تو خاندانی اثر کیوجہ سے اس اہم عہدے پر فائز ہیں۔ سیاسی لحاظ سے وہ صرف حلقے تک محدود ہیں۔ گلگت بلتستان کے دس اضلاع میں کبھی تنظیمی سرگرمیوں سے ا ب تک تقریبا غافل نظر آئے ہیں۔ اور نہ ہی کبھی ضرورت محسوس کی ہے۔ ہاں رائل فاونڈیشن جی۔بی کو منظم و فعال کرنے کے لئے کافی کوشاں رہتے ہیں۔ گورنر گلگت بلتستان کے خاندانی تنازعے کو حل کرنے کے لئے تمام راجگان کو لے کر دن رات محنت کی۔گورنر گلگت بلتستان میر غضنفر کو وفاق کیطرف سے عہدے سے ہٹائے جانے کی راجہ جلال نے شدید مخالفت کی۔ ذرائع کے مطابق اب مسلم لیگی میر غضنفر تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کررہے ہیں۔ بلتستان سے تعلق رکھنے والے مسلم لیگی سپیکر اسمبلی فدا ناشاد بھی راجہ خاندان سے تعلق رکھتے ہیں۔ فدا ناشاد مقپون بھی آگلے الیکشن سے پہلے راجہ جلال کی کشتی میں سوار ہونے جارہے ہیں۔ ایم ۔ڈبلیو۔ایم کے منحرف رکن اسمبلی کاچو امتیاز بھی رائل خاندان کے چشم و چراغ ہیں۔ اور وہ بھی آپنی خاندانی پارٹی کا حصہ بننے جارہے ہیں۔ نگر سے پرنس قاسم علی خان بھی آپنے خاندان کے افراد کو مضبوط کرنے کے لئے معاملات فائنل کرچکے ہیں۔ جبکہ یاسین سے راجہ جہانزیب تحریک انصاف کے ٹکٹ پر اسمبلی کے ممبر ہیں۔ روندو سے ایم ۔ڈبلیو۔ایم کے ٹکٹ پر الیکشن ہارنے والے راجہ ناصر بھی تحریک انصاف کا حصہ بن رہے ہیں۔ تحریک انصاف گلگت بلتستان کی قیادت عوامی مسائل اور آئینی مسلے کے حل کا کوئی فارمولا اور منشور تو نہیں رکھتی ہے۔ البتہ تحریک حقوق راجگان گلگت بلتستان کی منظم تنظیم کا روپ دھار چکی ہے۔ اس طرح تقریبا چھ ساتھ حلقوں سے راجوں کو پی۔ٹی۔آئی کے ٹکٹ پر نامزد کرکے وہی پرانا راجگی نظام لانا تحریک انصاف کی قیادت کے منشور کا حصہ ہے۔ تاکہ راجوں کی پرانی حکومت ذرا جمہوری انداز آپنا کر قائم کی جاسکے۔

  •  
  • 209
  •  
  •  
  •  
  •  
    209
    Shares

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*