تازہ ترین

دیامر کی صورت حال پر اپوزیشن لیڈر قانون ساز اسمبلی نے وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمٰن پر سنگین الزام لگادیا۔

گلگت( نامہ نگار ) گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور متحدہ اپوزیشن کے رہنما کپٹن ریٹائرڈ محمد شفیع خان نے دیامرمیں دشمن عناصر کی کاروائی پر شدید الفاظ میں مذمت کیا ہےاُنکا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے دیامر میں ایک درجن کے قریب اسکول جلانے کا معاملہ دراصل حکومت گلگت بلتستان اور گلگت بلتستان میں کام کرنے والے سرکاری ایجنسیوں کی ناکامی کا منہ بولتا ہے کیونکہ یہ پہلی بار ایسا نہیں ہوا ہے کہ اس خطے کے امن کو پاکستان دشمن گلگت بلتستان دشمن عناصر نے ثبوتاز کرنے کی کوشش کی ہو۔ اُنکا کہنا ہے ایسا لگتا ہے کہ وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمن مٹھی بھر دہشت گردوں کے آگے بے بس ہیں یا اُن کیلئے خصوصی ہمدردی ہے۔ اگر ایسا نہیں ہے تو دیامر کے جنگلات میں سیکورٹی فورسز کا ٹارگیٹڈ آپریشن ان دہشت گردوں سے مستقل طور پر نمٹنے کا ایک ہی حل ہے ورنہ یہ ملک دشمن سی پیک دشمن عناصر مستقل میں بھی کاروائی کرتے رہیں گے۔ اُنکا کہنا تھا کہ دیامر کے عوام امن پسند اور علم دوست ہیں لیکن بدقسمتی سے ماضی سے لیکر آج تک یہاں کچھ لوگ دہشت گردوں کے ہاتھوں استعمال ہوتے رہے ہیں جنکا قلع قمع ضروری ہے۔ جی بی تھنکرز فورم میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے اُن مزید کہنا تھا کہ دشمن کو خوف ہے کہ دیامر کے عوام تعلیمی میدان میں آگے نہ نکل جائیں یہی وجہ ہے کہ اسکولوں پر حملہ کیا گیا۔ اُنہوں نے کہا سابق حکومت اور موجودہ حکومت دیامر کے معاملات کو سنجیدگی سے لینے میں ناکام ہوا ہے۔ اُنہوں نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں اس وقت حقوق کی بات کرنے والوں پر فورا فورتھ شیڈول لگایا جاتا ہے لیکن دیامر میں ملک دشمن عناصر کے ہاتھوں میں کھیلنے والوں کو بے لگام چھوڑا ہوا ہے جو کہ انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*