تازہ ترین

دیامر میں امن امان کا صورت حال مزیدخراب،مسلم لیگ نون کی حکومت کے تمام تر دعوے دھرے رہ گئے۔

چلاس( نمائندہ خصوصی) ضلع دیامر کے مختلف علاقوں میں صورتحال انتہائی کشیدہ ہوگیا ہے۔ دہشتگردوں نے داریل تھانے پر حملہ کرکے گزشتہ روز پولیس آپریشن میں پکڑے جانے والے دہشتگردوں کو چھڑا کر لے گئے۔ تھانے پر حملے کے دوران دہشت گردوں اور پولیس میں فائرنگ کے تبادلے میں ایک دہشت گرد بھی مارا گیا جس کی شناخت شفیق الرحمان کے نام سے ہوئی ہے۔ دوسری طرف دہشتگردوں نے داریل جانے والی شاہراہ کے اوپر پہاڑی چوٹیوں پر قبضہ کرلیا ہے اور آنے جانے والے ہر شخص پر فائرنگ کررہے ہیں۔ اب سے تھوڑی دیر پہلے گلگت کی عدالت کے سیشن جج پر بھی فائرنگ کی گئی تھی تاہم وہ محفوظ رہے۔ اطلاعات کے مطابق دہشتگردوں نے داریل روڈ پر پتھر گرا کر ہر قسم کے ٹریفک کے لئے بند کردیا ہے۔تفصیلات کے مطابق گزشتہ رات پولیس نے علاقے کے مولوی شہزادہ خان کے گھر پر چھاپہ مارا تھا جہاں دہشت گردوں نے فائرنگ کرکے پولیس اہلکار عارف کو شہید کردیا تھا۔ شہید عارف کی نماز جنازہ میں شرکت کرنے کے لے آنے والوں پر بھی پہاڑوں چوٹیوں پر چھپے ہوئے دہشتگردوں کی فائرنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ واضح رہے کہ رات کے آپریشن میں جی بی پولیس نے مولوی شہزادہ خان کے گھر سے 2 دہشتگردوں کو گرفتار کرکے داریل تھانہ منتقل کردیا تھا۔ اس وقت گاڑیوں کو وہاں سے گزرنے دیا جارہا ہے مگر 4 دہشت گرد سکیورٹی فورسز کی وردی میں ملبوس، کفن ساتھ میں لیے اور چہرے ڈھانپے اسی جگہ پر موجود ہیں۔ سکیورٹی اداروں کی وردی میں تین دہشتگردوں کو پھوگچ کی بالائی نہر سے ان کے لیے کھانا لے جاتے ہوئے بھی دیکھا گیا ہے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*