تازہ ترین

سکردو میں پانی کی بڑھتی ہوئی قلت اوراس کی وجہ سے ہونے والے مسائل اور نقصانات اور حل کے حوالے سمینار کا انعقاد۔

سکردو ( پ،ر ) ضلعی انتظامیہ کے زیر اہتمام منعقدہ سمینار میں بلتستان یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد نعیم خان نے شرکاء کو اہم بریفنگ دی جس میں سرکاری ، نیم سرکاری اراکین سمیت عوامی ، سماجی، مذہبی اور سیاسی اکابرین نے شرکت کی۔ سمینار کا اصل مقصد لوگوں کو پانی کی بڑھتی ہوئی قلت اوراس کی وجہ سے ہونے والے مسائل اور نقصانات اور ان مسائل کے حل کے لئے لائحہ عمل کے بارے میں آگاہی دینی تھی۔ وائس چانسلر بلتستان یونیورسٹی نے شرکاء کو انڈس واٹر ٹریٹی کے تاریخی پس منظر پیش کرکیا۔ اُنہوں نے شرکاء کو گلگت بلتستان کی واٹر ریسورسز کی اہمیت کو اجاگر کراتے ہوئے کہا کہ اس علاقے میں نہایت ہی مفید گلیشیرز موجود ہے۔جو آنے والے حالات کا مقابلہ کرنے میں کارآمد ثابت ہوسکتا ہے۔ جس میں بلترو ، سیاچن، بیافو ، بتوراگلیشئر اور دیگر گلیشئرشامل ہیں۔ ڈاکٹر محمد نعیم خان نے مزید کہا کہ گلیشئر گرافٹنگ کے حوالے سے مقامی ٹیکنالوجی سے متعلق روایات کو محفوظ کرنے کے سلسلے میں بلتستان یونیورسٹی کے کردار پر بھی سیر حاصل بریفنگ دی۔ جس پر حالیہ ڈاکومینٹری بھی ریلیز کردی گئی تھی۔اُنہوں نے مزید کہا کہ ہمارے پاس واٹر ریسورس تو موجود ہے۔ مگر پانی کے تقسیمات کے انتظام میں خاطر خواہ بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ اس سال سدپارہ ڈیم میں پانی کی سطح گِر کر کم ہونا لمحہ فکریہ ہے۔جس کے لئے ہمیں فوری اقدامات کرنے کی ضرورت ہے

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About admin

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*