تازہ ترین

نواز شریف کے پرنسپل سیکرٹیری بھی کرپشن میں ملوث ہونے کا امکان، نیب نے گرفتار کرلیا۔

لاہور (آئی این پی ) قومی احتساب بیورو(نیب)نے سابق وزراء وزیراعظم کے سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد کو اختیارات کے ناجائز استعمال کے الزام میں گرفتار کرکے حوالات میں بند کردیا۔ جمعرات کو نیب لاہور نے سابق وزرائے اعظم نوازشریف اور شاہد خاقان عباسی کے سابق پرنسپل سیکریٹری فواد حسن فواد کو آشیانہ ہاسنگ اقبال کیس میں فواد حسن فواد کو گیارہویں مرتبہ طلب کیا تھا جس پر وہ تیسری مرتبہ نیب لاہور کے سامنے پیش ہوئے۔ نیب حکام نے فواد حسن فواد سے آشیانہ ہاسنگ اقبال کیس میں سوالات کیے ،لیکن فواد حسن فواد ان سوالوں کے جواب دینے میں ناکام رہے اور نیب افسران کو مطمئن نہ کر سکے جس کے بعد انہیں گرفتار کر نے کا فیصلہ کیا گیا۔ نیب حکام نے فواد حسن فواد کو گرفتا ر کرکے حوالات میں بند کردیا۔ (آج) جمعہ کو احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔ فواد حسن فواد کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے جن میں راولپنڈی میں مبینہ طور پر اربوں روپے کا پلازہ بھی شامل ہے۔ ان پر ملک کے مختلف علاقوں میں زرعی اراضی کی الاٹمنٹ اور مہنگی ہا ؤ سنگ اسکیموں میں پلاٹ حاصل کرنے کا بھی الزام ہے۔اس سے قبل نیب لاہور نے فروری اور اپریل میں بھی فواد حسن فواد کو طلب کرکے تفتیش کی تھی جبکہ ایف بی آر سے ان کے اثاثوں کی تفصیلات بھی حاصل کی گئی تھیں۔ فواد حسن فواد 2013 میں اس وقت کے وزیراعلی پنجاب شہباز شریف کے سیکریٹری بھی رہ چکے ہیں۔ فواد حسن فواد نے 21 نومبر 2015 کو وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری کے طور پر عہدہ سنبھالا تھا۔ انہوں نے نوازشریف اور شاہد خاقان عباسی دونوں کیساتھ کام کیا۔یاد رہے گزشتہ روز لاہور کی احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال سکینڈل میں ملوث سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ اور نجی کمپنی کے مالک شاہد سمیت دیگر ملزموں کے جوڈیشل ریمانڈ میں 9 روز کی توسیع کی تھی۔ عدالت نے تمام ملزموں کو 13 جولائی کو دوبارہ پیش کرنے کی ہدایت کی

About ISB-TNN

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*