تازہ ترین

سکردو پنڈی روڈ پرپرائیوٹ کار سروس والوں کی من مانیاں عروج پر، عوام کو لوٹا جارہا ہے۔

سکردو( نامہ نگار ) سکردو سے راولپنڈی کے روٹ پر حکومت کی جانب سے کرایوں کی وصولی کے حوالے سے قوانین نہ ہونے کی وجہ سے کار سروس والے عوام کو لوٹنے میں مصروف ہیں۔ تفصیلات کے مطابق اس وقت سکردو سے روالپنڈی کیلئے کئی درجن سے ذیادہ سرکاری طور پر غیررجسٹرڈ رینٹ اے کار سروس چل رہی ہے لیکن ان کار والوں کی جانب سے عوام سے وصول کرنے والوں نامناسب کرایوں کا کوئی پوچھنے والا نہیں ۔یہی وجہ ہے کہ اس وقت یہ سروس سکردو سے پنڈی روڈ پر ایک مافیا بن چُکی ہے جو عوام کو دونوں سے لوٹا جارہا ہے۔سکردو سے پنڈی کیلئے عام طور پر کار میں 2000 سے 3000 روپیہ فی مسافر لیا جاتا ہے لیکن اس مافیا نے کرائے کی اضافے کیلئے اپنی طرف سے ہی قانون بنا کر کار کے سیٹوں کو بھی جہاز کی طرح صف بندی کی ہوئی ہے جس کے تحت جہاز نہ آنے یارش ہونے کی صورت میں اگلے کی سیٹ کا 6 سے 7 ہزار جبکہ پچھلے سیٹ کا 4 سے پانچ ہزار کرایہ وصول کیا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ ان غیرقانونی کار سروس کے ذیادہ تر ڈرائیور منشیات کا نشہ کرتے ہیں مگر سکردو انتظامیہ اس اہم مسلے سے بلکل ہی لاعلم نظر آتا ہے ۔۔ یادگار شہداء سکردو سے لیکر مشہ بروم ہوٹل تک کے حدود میں پھیلے ان کار سروس کے مسافرین سے ہمارے نمائندے نے خصوصی طور پر انٹریوو لیا تو معلوم ہوا کہ یہ مافیا عوام کی مجبوری سے خوب فائدہ اُٹھا رہےہیں اور اُن کے اس گھناونی جرم میں مقامی ٹرانسپورٹ کے منشی حضرات براہ راست ملوث ہیں جو اُن کیلئے مجبور مسافریں کی مجبوری کا فائدہ اُٹھاتےہوئے کمیشن وصول کرتے ہیں۔ عوامی حلقوں کا کہنا ہے سکردو ضلعی انتظامیہ اس حوالے سے ایکشن لیں اور سکردو سے راولپنڈی اور گلگت کیلئے سروس فراہم کرنے والی غیرقانونی پرائیوٹ کار کمپینوں کی رجسٹریشن اور سرکاری سطح پر کرایہ نامے کو یقینی بنائیں۔

About ISB-TNN

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*