تازہ ترین

گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی میں متحدہ اپوزیشن نے چیف سیکرٹیری بابر حیات تارڑ کو ہٹانے کا مطالبہ کردیا۔

گلگت(پریس ریلیز) متحدہ اپوزیشن گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی نے خپلو میں چیف سیکرٹری گلگت بلتستان بابر حیات تارڈ کی جانب سے گلگت بلتستان کے عوام کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے کرنے پر اپنا رد عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر 100 ارب روپے بابر حیات اپنے گھر سے لے کر آیا ہے تو بوری میں ڈال کر اپنے ساتھ لے کر چلے جائیں۔ چیف سیکرٹری ہوتا کون ہے جو عوام سے ٹیکس کے بارے میں پوچھے۔ ٹیکس دینے یا نہ دینے کا فیصلہ ممبران اسمبلی کرینگے. چیف سیکرٹری گلگت بلتستان کے عوام کا نوکر ہے اور کسی نوکر کی یہ جرت نہیں ہونی چاہیے کہ وہ اپنے آقاؤں سے بدتمیزی کے ساتھ پیش آئے. گلگت بلتستان میں ایسے بدتمیزوں کے لئے کوئی گنجائش نہیں ہے.ایک سازش کے تحت نیب زدہ وزیراعظم کی جانب سے بیجئے گئے چیف سیکرٹری نے اپنے ناپاک تیور دکھانا شروع کر دیے ہیں۔موصوف نے آتے ہی حکومتی ترجمان بن کر گلگت بلتستان آرڈر 2018 کے حق میں پریس کانفرنس کیا جسے ہم نے مہمان سمجھ کر برداشت کیا۔ مگر اب گلگت بلتستان کے عوام کی توہین برداشت نہیں کرینگے۔ چیف سیکرٹری کا تزحیک آمیز رویہ علاقے میں پاکستان کے خلاف نفرت پھیلانے کا مترادف سمجھتے ہوئے چیف آف آرمی سٹاف، نگراں وزیراعظم پاکستان اور صدر پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں بابر حیات تارڈ کے خدمات کو فورا واپس لئے جائیں۔ بابر حیات تارڈ گلگت بلتستان کے عوام کے تارگٹ میں آچکے ہیں. گلگت بلتستان کے عوام کو ایسے وائسرائے نہیں چاہیئے. عید سے پہلے تارڈ کی خدمات واپس نہیں لی گئی تو عوام کا سمندر چیف سیکرٹری کو یہاں سے باہر نکالینگے۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*