تازہ ترین

متحدہ اپوزیشن کےلوگ دبے لفظوں گلگت بلتستان میں انڈیا کو دعوت دے رہے ہیں۔ وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن۔

گلگت(ڈسٹرک رپورٹر ) مقامی میڈیا رپورٹرز کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے وزیر گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن کا کہنا تھا کہ اس وقت اپوزیشن کی خواہش ہے کہ کسی بھی طرح گلگت بلتستان کاماحول خراب ہوجائے امن وامان کی صورت حال بدتر ہوجائے اورخون خرابہ ہو۔ اُنہوں متحدہ اپوزیشن پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ دراصل یہ لوگ دبے الفاظ میں انڈیا کو دعوت دے رہے ہیں اور جو کچھ گزشتہ ایک سا ل سے ہندوستان باربار جو مسائل اٹھارہاہے اور حکومت کوباربار وضاحت کرنا پڑ رہی ہے یہ ان حضرات کے طرز عمل کی وجہ سے ہے۔بدھ کے روز قانون سازاسمبلی کے اجلاس میں گلگت بلتستان آرڈر 2018پر بحث کا آغاز کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بڑا دکھ ہوتا ہے کہ اس خطے میں ایسے رواج ڈالے جارہے ہیں کہ پھر آئندہ کیلئے کوئی سیاسی حکومت کام نہیں کرسکے گی یہاں پر کوئی غیر جمہوری قوت ہی حکومت کرسکتی ہے یہ کونسا طریقہ ہے انہوںنے کہا کہ جب وزیراعظم سکردو آتے ہیں تو وہاں یوم سیاہ منایا جاتا ہے جب وزیراعظم گلگت آتے ہیں تو یہاں یوم سیاہ منایاجاتا ہے ملک کا وزیر اعظم آپ کوکچھ دینے آتاہے کچھ لینے نہیں آتا ہے یہ طریقہ کار جمہوریت میں اورہمارے علاقے کی حساسیت کے پیش نظر درست نہیں ہے اس طرح ہم ہندوستان کو پروپیگنڈے کا موقع دیتے ہیں یہ اسمبلی موجود ہے یہاں بات کریں ،پریس کانفرنس کریں سیمینار بلائیں انہوںنے کہاکہ اگر یہ سلسلہ جاری رہا تو میں اس ہائوس کو بتانا چاہتا ہوں کہ میں بھی ایک سیاسی کارکن ہوں ایک سیاسی جماعت کا سربراہ ہوں پھر آج کے بعد گلگت بلتستان میں کسی بھی سیاسی جماعت کا سربراہ آئے گا تو اس کے ساتھ یہی سلوک کیا جائیگا۔انہوںنے کہا کہ گزشتہ چار دنوں سے ہم اپوزیشن کو کہتے رہے ہیں کہ آپ اسی آرڈر کے تحت مراعات لیتے ہیں گاڑیاں لیتے ہیں ترقیاتی فنڈز لیتے ہیں اسی آرڈر کے تحت دعویٰ کرتے ہیں کہ منتخب نمائندے ہیں اگر آپ اس آرڈر کو نہیں مانتے ہیں تو اخلاقی جرات پیدا کریں اور اسمبلی کی رکنیت سے مستعفیٰ ہو جائیں تاکہ ان حلقوں میں دوبارہ الیکشن ہوں ۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About ISB-TNN

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*