تازہ ترین

گلگت بلتستان آرڈر 2018 نے بھارت کے سینے پر پاکستانیت کی کیل ٹھونک دی ۔ مشیراطلاعات

گلگت (پ ر)مشیر اطلاعات گلگت بلتستان شمس میر نے یوتھ فورم کے وفد سے ملاقات میں کہا ہے کہ گلگت بلتستان آرڈر 2018ء ہمارے پاکستانی تشخص کا وہ آئین ہے جس نے بھارت کے سینے پر پاکستانیت کی کیل ٹھونک دی ہے۔ گلگت بلتستان آرڈر 2018ء میں آئین پاکستان کے بنیادی شہریت کے حق،گلگت بلتستان کو آئین پاکستان کے پرنسپل آف پالیسی کے تحت صوبائی خود مختاری ،آئین پاکستان کے تحت اٹھارویں ترمیم کے اختیارات گلگت بلتستان کو تفویض کرنے سے بھارت بلبلا اٹھا ہے اور شور مچارہاہے کہ گلگت بلتستان کو پاکستان کے قومی دھارے میں شامل کیوں کیا گیا ہے۔بھارت کے سینے میں مونگ دل رہی ہے کہ گلگت بلتستان کو آئین پاکستان کے دائرے کار میں کیوں لایا جارہا ہے اور گلگت بلتستان کو پاکستانی صوبائی یونٹ اس آرڈر کے تحت کیوں تسلیم کیا گیا ہے۔شمس میر نے کہا کہ آرڈر 2018ء پاکستانیت کی غیر متزلزل دلیل بن چکا ہے اور اس بات کا ثبوت ہے کہ موجودہ اصلاحات میں گلگت بلتستان کے عوام کو جو شناخت،اختیارات اور مراعات دی گئی ہے وہ بھارت کو حواس باختہ کر گیا ہے۔مشیر اطلاعات نے مذید کہا ہے کہ گلگت بلتستان ریاست پاکستان کی اکائی ہے اور گلگت بلتستان آرڈر 2018ء میں مسئلہ کشمیرکو متاثر کیئے بغیر گلگت بلتستان کو ریاست پاکستان کامضبوط یونٹ بنادیا گیا ہے جسکی جہ سے آج بھارت پاگل ہوگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام پاکستانی تھے،پاکستانی ہیں اور آرڈر 2018ء نے گلگت بلتستان کی عوام کو دیگر صوبوں کے مقابلے پاکستانیت کا سرتاج بنادیا ہے یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ آرڈر 2018ء میں وہ تمام بنیادی قومی حقوق ہیں جو ریاست پاکستان کے دیگر صوبوں کو حاصل ہیں بلکہ آرڈر 2018ء میں گلگت بلتستان کیلئے خصوصی اختیارات اور مراعات نے گلگت بلتستان کو ریاست پاکستان کا انمول صوبہ بنادیا ہے۔مشیر اطلاعات نے کہا کہ آرڈر 2018ء پر بھارت کے احتجاج نے ثابت کردیا کہ یہ آرڈرگلگت بلتستان کیلئے گولڈن ڈاکیومنٹ کی حیثیت رکھتا ہے جس میں گلگت بلتستان کو تمام حقوق اور اختیارات دئیے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارتی واویلا کے تناظر میں گلگت بلتستان میں چند عناصر کا اس آرڈر کیخلاف احتجاج جہاں بھارتی زبان ہے وہاں گلگت بلتستان کے حقوق کے دشمنی کے مترادف ہے۔شمس میر نے کہا کہ اپوزیشن بھارتی بیانیے کو تقویت دے رہی ہے اور گلگت بلتستان آرڈر 2018ء کی مخالفت کررہی ہے جسکی گلگت بلتستان کی عوام بھرپور الفاظ میں مذمت کرتی ہے۔مشیر اطلاعات نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ ن گلگت بلتستان کی سب سے بڑی عوامی جماعت ہے اور اور آرڈر 2018ء کے حوالے سے بھارتی روش رکھنے والے عوامی غضب سے گزریں گے۔مشیر اطلاعات نے کہا کہ آرڈر 2018ء بھارتی تابوت میں پاکستانی کیل ہے اور گلگت بلتستان میں پاکستان کا آئین ہے۔

About ISB-TNN

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*