تازہ ترین

اصلاحات 2018آئیڈیل ماڈل ہے ، امجد ایڈووکیٹ گلگت بلتستان میں کرپٹ اور بے لگام سیٹ اپ چاہتا ہے۔ مشیر اطلاعات

گلگت(پ۔ر) مشیر اطلاعات گلگت بلتستان شمس میر نے کہا ہے کہ امجد ایڈووکیٹ گلگت بلتستان میں کرپٹ اور بے لگام سیٹ اپ چاہتا ہے جہاں یہ لوگ ماضی کی طرح نوکریاں فروخت کریں اور پلاٹ مافیا کی سرپرستی کرکے مال بنائیں۔ یہ ٹیچر فروش گروہ گلگت بلتستان میں استحکام، شفافیت اور قانون کی بالادستی کا دشمن ہے اور گلگت بلتستان میں اپنے ماضی کا فرقہ وارانہ غنڈہ راج چاہتا ہے۔ امجد ایڈووکیٹ کی باتیں بغض حفیظ میں اتنی متعصب ہوتی ہیں کہ لوگ اب اسے قانون دان نہیں تعصب دان اور کرپٹ دان کے نام سے یاد کرتے ہیں۔مشیر اطلاعات نے کہا کہ آئینی حقوق کی بات کرنے والی پیپلز پارٹی کا یہ حال ہے کہ اسلام آباد دھرنے میں پیپلز پارٹی کی مرکزی قیادت نے انہیں لفٹ نہیں کروائی۔ پیپلز پارٹی کا دوغلی سیاست کا یہ حال ہے اس پارٹی کے مرکزی منشور میں گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کا کوئی ذکر نہیں، مشیر اطلاعات شمس میر نے کہا ہے کہ موجودہ آئینی اصلاحات گلگت بلتستان کے عوام کو دیگر صوبوں سے دو قدم آگے سیاسی، سماجی ا ور معاشی حقوق کی ضمانت دیتے ہیں۔ اصلاحات 2018آئیڈیل ماڈل ہے جس میں صوبائی خود مختاری،سماجی آزادیاں اور قانون کی عملداری ہے تاکہ علاقے کی عوام محفوظ اور روشن مستقبل دیا جائے جبکہ ہماری اگلی منزل قومی اسمبلی اور سینیٹ ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان کو تعمیر و ترقی کی زمینی حقیقت وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے بنایا اور یہی وہ قیادت ہے جو گلگت بلتستان کو عوامی نظام اور آئینی گورننس کا تحفہ دے سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امجد ایڈووکیٹ کی پیپلز پارٹی ٹیچر فروش جماعت ہے جبکہ دھرنے میں شامل چند حضرات جن میں کاچو امتیاز سر فہرست ہیں نے کونسل کے انتخابات میں اپنا ضمیر بیچا ہے ایسے لوگوں سے یہ توقع رکھنا کہ یہ لوگ گلگت بلتستان کے عوام کے حقوق کی بات کرینگے دیوانے کا خواب ہے بلکہ ان لوگوں پر اعتماد کرنا گلگت بلتستان کے مستقبل کی خودکشی ہوگی۔ شمس میر نے کہا کہ یہ لوگ گلگت بلتستان کے اس ترقی کرتے پر امن ماحول کو ڈی ریل کرنے کی سازشیں کررہے ہیں تاکہ گلگت بلتستان کو ایک بار پھر کرفیو زدہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیس بک لیڈر نوجوانوں کے جذبات سے کھیل رہے ہیں اور آئینی اصلاحات 2018سے متعلق جھوٹ کے ایسے ریکارڈ قائم کررہے ہیں کہ خدا کی پناہ۔ یہ اپنی جھوٹی سیاست کیلئے مسلم لیگ ن کی صوبائی حکومت کے اقدامات سے اتنے خوفزدہ ہیں کہ اخلاقیات اور سچائی سے ہٹ کر داستانیں گڑھ رہے ہیں تاکہ وزیر اعلیٰ حافظ حفیظ الرحمن کی ترقی اور اصلاحات کے وژن کو سبوتاژ کرکے گلگت بلتستان کو ایک بار پھر ماضی کے اندھیروں کی نذر کیا جائے۔ مشیر اطلاعات نے کہا کہ ہمارے پاس گلگت بلتستان کی عوام کا سب سے بڑا مینڈیٹ ہے اور یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ گلگت بلتستان کے عوامی حقوق کا تحفظ کریں اور عوام کو ان کرپٹ فیس بک مافیاز کا اصل چہرہ دکھایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ عوام انکے ماضی کے کالے دھندوں پر ایک نظر ضرور دوڑائیں اسکے بعد انکی آواز سے آواز ملائیں کیونکہ با ضمیر معاشرے ہمیشہ با ضمیر قیادت کے ساتھ کھڑے ہوتے ہیں، ٹیچر فروش اور ضمیر فروش لیڈروں کے ساتھ نہیں۔

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

About TNN-ISB

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*