تازہ ترین

ممبئی حملوں پر نواز شریف کی بیان کے بعد کی صورت حال کا جائزہ لینے کیلئے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی سلامتی کونسل کا اجلاس آج پیر کے روز وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت منعقد ہو گا۔آئی ایس پی آر کے مطابق وزیر اعظم کو اس اجلاس کے انعقاد کی تجویز دی گئی تاکہ شرکاءممبئی حملوں کے بارے میں میڈیا میں آنے والے حقائق کے بالکل منافی اور گمراہ کن بیانات پر غور کیا جائے گا۔ فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے سربراہ کے دائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے اتوار کو اس ضمن میں ایک ”ایک ٹویٹ“ کے ذریعہ اطلاع دی کہ وزیراعظم کو قومی سلامتی کمیٹی اجلاس بلانے کی تجویزدی گئی تھی تاکہ ممبئی واقعہ کے حوالے سے میڈیا کے گمراہ کن بیان پر تبادلہ خیال کیا جاسکے۔ خیال رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ایک اخباری انٹرویو کے حوالہ سے ملکی اور عالمی میڈیا میں غلغلہ برپا ہے جس میں مبینہ طور پر انہوں نے کہا تھا کہ کیا غیر ریاستی عناصر کو یہ اجازت دینی چاہیے کہ وہ ممبئی جا کر 150 افراد کو قتل کریں، بتایا جائے ہم ممبئی حملہ کیس کا ٹرائل مکمل کیوں نہیں کرسکے۔سابق وزیر اعظم کے اس بیان کو عالمی اور بھارتی میڈیا میں پاکستان کے خلاف ممبئی حملوں میں ملوث ہونے کی تصدیق کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کی ٹویٹ میں سابق وزیر اعظم کی طرف کوئی اشارہ نہیں کیا گیا بلکہ ”گمراہ کن میڈیا رپورٹوں“ کا ذکر ہے۔ قومی سلامتی کونسل کا یہ اجلاس آج صبح کو منعقد ہوگا جس میں وزیر دفاع و خارجہ خرم دستگیر خان، وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کے علاوہ چیرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کے علاوہ تینوں مسلح افواج کے سربراہان، مشیر قومی سلامتی بھی شریک ہوں گے۔ وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال بھی قومی سلامتی کمیٹی کے کے رکن ہیں لیکن وہ ہسپتال میں داخل ہونے کی وجہ سے اجلاس میں شریک نہیں ہوں گے۔

About ISB-TNN

اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

*